امریکی شہری میں کورونا وائرس کی ایسی علامت سامنے آگئی کہ کسی کو بھی خوف آجائے

امریکی شہری میں کورونا وائرس کی ایسی علامت سامنے آگئی کہ کسی کو بھی خوف آجائے
امریکی شہری میں کورونا وائرس کی ایسی علامت سامنے آگئی کہ کسی کو بھی خوف آجائے

  

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس سے صحت یاب ہونے والے مریضوں میں اس موذی مرض کے کئی طرح کے طویل مدتی نقصانات بھی دیکھے جا رہے ہیں تاہم گزشتہ دنوں امریکہ کے ایک شہری میں اس کا ایک ایسا نقصان دیکھنے میں آیا ہے کہ سن کر ہی آدمی وحشت زدہ رہ جائے۔ میل آن لائن کے مطابق اس آدمی کا تعلق ہوسٹن سے ہے جس کی کورونا وائرس کے سبب زبان سوج کر بہت بڑی ہو گئی اور منہ سے باہر نکل آئی، جس کی وجہ سے اس کے لیے بولنا اور کچھ کھانا پینا ناممکن ہو گیا۔

رپورٹ کے مطابق اس سیاہ فام شہری کو حالت سنگین ہونے پر ہسپتال منتقل کیا گیا تھا جہاں اس کی یہ حالت ہوئی۔ ڈاکٹروں کے مطابق اس بیماری کو میکروگلوسیا (Macroglossia)کہا جاتا ہے جس میں انسان کی زبان کا سائز بہت زیادہ بڑھ جاتا ہے۔ یہ عارضہ عام طور پر سٹروک آنے پر لاحق ہوتا ہے یا پھر طویل عرصے تک اوندھے منہ پڑا رہنے سے بھی لاحق ہو سکتا ہے۔اس کنڈیشن پر تحقیق کرنے والے ڈاکٹر جیمز میلویلے کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کی وجہ سے یہ عارضہ زیادہ تر سیاہ فام شہریوں میں سامنے آ رہا ہے۔ امریکہ میں اب تک اس طرح کے 9کیس سامنے آ چکے ہیں جن میں سے 8سیاہ فام مریض تھے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -