سیکیورٹی گارڈ کے ڈاکٹر بن کر علاج کرنے کا واقعہ ، صوبائی وزیر صحت  نےسخت نوٹس لیتے ہوئے بڑا حکم جاری کردیا

سیکیورٹی گارڈ کے ڈاکٹر بن کر علاج کرنے کا واقعہ ، صوبائی وزیر صحت  نےسخت نوٹس ...
سیکیورٹی گارڈ کے ڈاکٹر بن کر علاج کرنے کا واقعہ ، صوبائی وزیر صحت  نےسخت نوٹس لیتے ہوئے بڑا حکم جاری کردیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن )لاہور کے میو ہسپتال میں جعلی ڈاکٹر بن کر مریضہ کا علاج کرنے کے واقعہ کا وزیر صحت پنجاب ڈاکٹر یاسمین راشد نے سختی سے نوٹس لیتے ہوئے سیکریٹری ہیلتھ کوتحقیقات کاحکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈاکٹر یاسمین راشد نے میو ہسپتال کے سیکیورٹی گارڈ کی جانب سے ڈاکٹر بن کر مریضہ کا آپریشن کرنے کی خبروں پر سخت ایکشن لیتے ہوئے سیکرٹری ہیلتھ کو حکم دیا ہے کہ اس واقعہ کی مکمل انکوائری کرتے ہوئے رپورٹ دی جائے اور اس واقعہ میں ملوث افراد کے خلاف سخت ایکشن لیا جائے جبکہ غفلت کے مرتکب افراد کی بھی نشاندہی کرتے ہوئے کارروائی کی جائے ۔دوسری طرف میو ہسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر افتخار کا کہنا ہے کہ انتظامیہ نے سیکیورٹی اہلکار وحید بٹ کو پولیس کے حوالے کرتے ہوئے آپریشن تھیٹر میں ڈیوٹی پر مامور ملازم عثمان بٹ کو معطل کر دیا گیا۔

واضح رہے کہ میو ہسپتال میں سیکیورٹی گارڈ کی جانب سے 80 سالہ مریضہ کا سرجیکل ٹاور میں آپریشن کرنے کی خبر سامنے آئی تھی۔ ہسپتال ذرائع کا کہنا ہے کہ 17 مئی کی شام کوخاتون کو پھوڑے کے علاج کیلئے سرجیکل ایمرجنسی میں لایا گیا، غلط آپریشن سےخون بند نہ ہوا لیکن پٹی کرکے گھر بھجوا دیا گیا جبکہ سیکیورٹی گارڈ خود کو ڈاکٹر ظاہر کرکے دو  روز تک گھر میں مریضہ کی پٹی بھی کرتا رہا، مریضہ کا خون بند نہ ہونے سے حالت بگڑ گئی۔لواحقین کا کہنا ہے کہ مریضہ کو دوبارہ ہسپتال لایا گیا توحقیقت سامنے آئی۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -لاہور -