22مئی ۔۔۔ تاریخ کے آئینے میں

22مئی ۔۔۔ تاریخ کے آئینے میں
22مئی ۔۔۔ تاریخ کے آئینے میں

  

آج کے دن 2012کو دنیا کے بلند ترین ٹاور ”سکائی ٹری “کو عوام کیلئے کھول دیا گیا ، جاپان کے دارالحکومت ٹوکیو میں قائم اس ٹاور کو ہزاروں کی تعداد میں زائرین دیکھنے کیلئے پہنچے ۔افتتاح کے روز بارش کے باوجود رہائشی اور سیاح ٹاور اور اس کے ملحقہ شاپنگ اور تفریحی کمپلیکس کے اردگرد جمع ہوئے ، اس ٹاورکی انچائی 643میٹر ہے ۔ 22مئی 2010 کو دنیا کی تاریخ کا بدترین فضائی حادثہ پیش آیا ، آج کے دن ایئر انڈیا ایکسپریس فلائٹ 818منگلور انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر لینڈنگ کے دوران رن وے سے ہٹ کر ایک پہاڑ پر گرا دھماکے کے ساتھ پھٹ گیا ،طیارے میں 158افراد سوار تھے جن میں سے کوئی بھی زندہ نہ بچ سکا،واضح رہے کہ بوئنٹ 737 دنیا کا سب سے زیادہ اڑانے والا ہوائی جہاز ہے۔ آج ہی کے دن 1960کو چلی میں تاریخ کا سب سے زیادہ تباہ کن زلزلہ آیا ، چلی میں 9.5شدت کا زلزلہ ریکارڈ کیا گیا ایک اندازے کے مطابق اس زلزلے سے 2ہزار سے لیکر 6ہزار افراد کے درمیان افراد ہلاک ہوئے ۔اس زلزلہ کو” والدیویا“کا نام دیا گیا ۔ 22مئی 1998 کو انڈونیشیا میں حکومتی بدعنوانی کی مقدار کے بارے میں احتجاج کرنے والے حکومت مخالف طلبہ مظاہرین کو نکالنے کے لیے بھاری ہتھیاروں سے لیس سپاہیوں نے جکارتہ میں پارلیمنٹ میں مارچ کیا، یہ بدعنوانی اور معیشت پر موجودہ انتظامیہ کے خلاف ہفتوں کے ہنگاموں کے بعد ہوا۔

مزید :

ادب وثقافت -