پنجاب میں نشہ آور اشیاءکا بھرپور استعمال، پولیس، محکمہ فوڈ اتھارٹی کےلئے چیلنج

پنجاب میں نشہ آور اشیاءکا بھرپور استعمال، پولیس، محکمہ فوڈ اتھارٹی کےلئے ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


صادق آباد(تحصیل رپورٹر) منشیات کی ابتدائی سیڑھی پان گٹکا و(بقیہ نمبر15صفحہ6پر )
غیرہ کا استعمال ہے جس کے بعد سیگریٹ اور پھر سنگین نوعیت کی نشہ آور اشیا کا استعمال عام ہو جاتا ہے اس وقت نوجوان نسل میں نشہ آور اشیا کا استعمال خاص کر ٹین ایج طلبا میں بڑی تیزی کیساتھ سرعیت کر رہا ہے۔ ان نشہ آور اشیا میں زیادہ تر مختلف ذائقہ دار تمباکو والی پتی کے پانگٹکا کراچی والا ماوا پان پراگ گٹکا ون ٹو ون گٹکا آداب گٹکا مین پوریگیلا گٹکا اور شیشے کے فلیور قابل ذکر ہیں اور یہ سب کچھ جن دوکانات پر فروخت کیا جاتا ہے وہ زیادہ تر سٹی میں اور گردونواح میں تعلیمی اداروں کے قریب قریب ہی قائم ہیں۔ ان میں زیادہ مشہور زخمی پان شاپ پل اسکول بازار زخمی پان شاپ وائرلیس پل زخمی پان شاپ اڈہ گلمرگ رانا پان شاپ ریلوے روڑ ذکا پان شاپ ریلوے روڑ مقدر پان شاپ عباسیہ پل مقدر پان شاپ پل اسکول بازار رحمان پان شاپ چک 72 این پی زخمی پان شاپ چوک پٹھانستان بابو پان شاپ نزد یونی لیور بابو پان شاپ نزد راجہ پیٹرول پمپ شاہین پان شاپ نزد راجہ پیٹرول پمپرانا پان شاپ نزد راجہ پیٹرول پمپ اجمل پان شاپ گلشن اقبال زخمی پان شاپ اقبال نگر اور اڈہ خانپور پر متعدد پان شاپس وغیرہ پر گٹکا اور پان کی تمام ورائٹیوں کی فروخت دھڑلے سے جاری ہے اور یہ تمام دوکانات سرکاری و پرائیویٹ تعلیمی اداروں کے قریب قریب ہی واقع ہیں۔ ایک سروے میں چونکا دینے والا انکشاف یہ ہوا کہ ان مضر صحت نشہ آور اشیا کی فروخت کی روک تھام کے لیے محکمہ پولیس اپنے روائتی طریقہ کے مطابق پر جوش انداز میں کاروائی تو کرتی ہے مگر پس پردہ ایک پر ایف آئی آر دی تو چار کو چھوڑ بھی دیا ایسا ہی کچھ طریقہ محکمہ پنجاب فوڈ اتھارٹی کا ہے جو فورا کاروائی کرتے ہوئے موقع پر مناسب جرمانہ کر کے کچھ دیر یا دو چار دن کے لیے دوکان سیل کر دیتے ہیں مگر پھر لین دین کے معاملات طے ہو جاتے ہیں تو دوبارہ وہاں کوئی کاروائی نہیں کی جاتی بس کاغذی کاروائیوں میں نام چلتاہےسالانہ ٹارگٹ بھی پورا اور افسران بالا بھی خوش رہتے ہیں جبکہ میڈیکل تحقیق کے مطابق منہ اور گلا کے کینسر کے مریضوں میں 60 سے 70فیصد مریض گٹکا وغیرہ کے استعمال سے کینسر کے مرض کا شکار ہوتے ہیں۔ سول سوسائٹی اور شہری حلقوں نے محکمہ پنجاب فوڈ اتھارٹی اور ڈی پی او سے مطالبہ کیا ہے کہ گٹکا وغیرہ مضر صحت نشہ آور اشیا کی فروخت کرنے والے دوکانداروں اور دیگر عناصر جو نشہ آور اشیا کی فروخت کررہے ہیں کے خلاف سخت سے سخت قانونی کارروائی کی جائے۔