المناک حادثہ، دو طالب عملوں کی نماز جنازہ ادا،آبائی قبرستان بارتھی میں سپرد خاک

المناک حادثہ، دو طالب عملوں کی نماز جنازہ ادا،آبائی قبرستان بارتھی میں سپرد ...

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 کوٹ ادو(تحصیل رپورٹر،نامہ نگار) جھوک بارتھی تونسہ شریف کا (بقیہ نمبر22صفحہ6پر )
رہائشی سعداللہ قیصرانی بلوچ جو کہ این آر ایس پی بینک کا منیجر ہےبچوں کی پڑھائی کے سلسلہ میں7 سال پہلے کوٹ ادو وارڈ نمبر10نزد فیضان مدینہ رہائش پذیر تھا جس کے بچے مقامی پرائیویٹ نجی تعلیمی ادارہ (دی ایجوکیٹر) میں زیر تعلیم تھے،گزشتہ سےپیوستہ روز سعد اللہ قیصرانی بلوچ کا بڑابیٹا16سالہ محمد ارسلان اپنے2بھائیوں8سالہ محمد ریحان اور 11سالہ محمد فرحان جو کہ تیسری اور ساتویں کلاس کے طالبعلم تھے کو موٹر سائیکل نمبری 5264ڈی جی ایل پرسوار کرکےدی ایجوکیٹرسکول چھوڑنےجارہا تھا کہ اباسین سی این جی پمپ کے قریب سامنے سے آنے والی رانا جہانزیب کمپنی کی بس نمبری 1755ایم این ایس جو کہ رحیم یار خان سے ڈیرہ اسماعیل خان جا رہی تھی تیز رفتاری پر قابونہ رکھتے ہوئےزوردار ٹکر مار دی تھی ٹکر کے نتیجہ میں چھوڑنےکیلئے جانے والا بڑا بھائی محمد ارسلان اور8سالہ محمد ریحان موقع پر ہی جاں بحق ہوگئے تھےجبکہ 11سالہ محمدفرحان شدید زخمی ہوگیاتھا،جاں بحق ہونے والے محمد ارسلان اور محمد ریحان کی نماز جنازہ رات 9بجے انکے آبائی گاں جھوک بارتھی میں اداکردی گئی اور دونوں بھائیوں کو انکے آبائی قبرستان بارتھی میں سپردخاک کردیا گیا،نشتر اسپتال ملتان میں منتقل ہونے والے تیسرے بھائی محمد فرحان جس کا حادثہ میں چوٹوں کی وجہ سے دماغ متاثر ہوا اور اس کے دونوں جبڑے بھی ٹوٹ گئے جبکہ ناک بھی شدید زخمی ہوا تھا نشتر اسپتال کے نیور وارڈکی ایمرجنسی کے بیڈ نمبر7پر زیر علاج ہیں،والد سعد اللہ قیصرانی بلوچ کے مطابق اب ان کے بیٹے کے حالت کچھ بہتر ہے،