سیہون میں پسند کی شادی کو خفیہ رکھنے والی نوجوان خاتون ٹیچر کے قتل کا معمہ پولیس نے آخر کار حل کر لیا ، حیران کن انکشاف 

سیہون میں پسند کی شادی کو خفیہ رکھنے والی نوجوان خاتون ٹیچر کے قتل کا معمہ ...
سیہون میں پسند کی شادی کو خفیہ رکھنے والی نوجوان خاتون ٹیچر کے قتل کا معمہ پولیس نے آخر کار حل کر لیا ، حیران کن انکشاف 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

سیہون (ڈیلی پاکستان آن لائن )سیہون میں پسندکی شادی کرنے والی خاتون ٹیچر کے قتل کا معمہ پولیس نے حل کر لیاہے ۔
پولیس کے مطابق انکوائری میں نورین فاطمہ کے قتل کی تصدیق ہوگئی ہے،گرفتار ملزم محسن مہرکی نشاندہی پر لڑکی کا چچا جمن مہر بھی گرفتار کرلیا گیا ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ نورین فاطمہ کو جس پستول سے گولی لگی وہ پستول جمن مہرکا ہے، گرفتار ملزمان نے اعتراف جرم کرلیا ہے، ملزمان کو آج سیہون کی عدالت میں ریمانڈ کے لیے پیش کیا جائےگا۔پولیس کے مطابق نورین فاطمہ کو 6 روز قبل گھر میں گولیاں مار کر قتل کیا گیا تھا، نورین فاطمہ کے ورثاءنے واقعے کو خودکشی قرار دیا تھا، نورین فاطمہ کے شوہر کی مدعیت میں پولیس نے مقدمہ درج کیا تھا، مقدمے میں نورین کے بھائی محسن مہر اور والد محمد مہر نامزد ہیں۔ 25 سال کی سکول ٹیچر نورین فاطمہ چھپ کر نکاح کرنے کے بعد سے گھر پر ہی تھی، گھر والوں کو حقیقت بتائی تو قتل کردیا گیا۔

مزید :

قومی -