سمیڈا کافین انڈسٹری کی اپ گریڈیشن کیلئے خصوصی اقدامات کرنے کا فیصلہ

سمیڈا کافین انڈسٹری کی اپ گریڈیشن کیلئے خصوصی اقدامات کرنے کا فیصلہ

لاہور(کامرس رپورٹر)سمال اینڈ میڈیم انٹر پرائزز ڈویلپمنٹ اتھارٹی’ سمیڈا‘ نے فین انڈسٹری کی اپ گریڈیشن کیلئے خصوصی اقدامات کرنے کا فیصلہ کیا ہے تاکہ اس صنعت کو عالمی منڈی میں درپیش مسابقت کا سامنا کرنے کے قابل بنایا جا سکے۔ پاکستان الیکٹرک فین مینوفیکچررز ایسوسی ایشن ( پیفما) کے ایک وفد سے ملاقات کرتے ہوئے سمیڈا کے چیف ایگزیکٹو آفیسر محمد عالمگیر چوہدری نے اس مقصد کیلئے پیفما اور سمیڈا کے اراکین پر مشتمل ایک دو رکنی کمیٹی تشکیل دینے کا اعلان کیا۔ اس موقع پرمنعقدہ اجلاس میں پیفما کے وفد کی قیادت پیفما کے چیئرمین محمد اظہر اسلم کررہے تھے جبکہ وفد کے دیگر اراکین میں ملک اظہار احمد اعوان اور تیمور رفیق شامل تھے۔سمیڈا کی طرف سے سمیڈا کے صوبائی سربراہ (پنجاب) حسنین جاوید، ڈپٹی جنرل مینیجر مکیش کمار اور مینیجر آﺅٹ ریچ جاوید افضل بھی اجلاس میں موجود تھے۔محمد عالمگیر چوہدری نے وفد کے اعزاز میں خطبہئِ استقبالیہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ سمیڈا ماضی میں بھی فین انڈسٹر ی کی ترقی کیلئے کوششیں کرتا رہا ہے جن میں ٹریننگ پروگراموں کا انعقاد نمایاں ہے۔

 انہوں نے اس امر پر اتفاق کیا کہ پاکستان کی فین انڈسٹری کو اگر عالمی اور علاقائی مقابلے کے قابل نہ بنایا گیا تو ایکسپورٹ مارکیت میں اس کی بقاءمشکل ہو جائئے گی۔ لہٰذاہ انہوں نے یقن دہانی کرائی کہ سمیڈا فین انڈسٹری کو اپ گریڈ کرنے کیلئے نہ صرف تکنیکی اور فنی ضرورتوں کی نشاندہی کرے گا بلکہ ان ضرورتوں کو پورا کرنے کیلئے مالیاتی اداروں کے تعاون کو بھی ممکن بنائے گا۔ انہوں نے کہا کوشش کی جائے گی کہ فین انڈسٹر ی کی اپ گریڈیشن کیلئے درکار مالیاتی ضرورتوں کو پورا کرنے کیلئے ایک خصوصی لینڈنگ سکیم تشکیل دی جائے۔علاوہ ازیں انہوں نے کہا کہ بین الاقوامی سطح پر درکار تصدیقی مراحل کو پورا کرنے کیلئے سمیڈا نے ایک خصوصی پلان تشکیل کر کے حکومت کو پیش کیا ہے جسے حکومت نے اپنے ” وژن 2025“میں شامل کر لیا ہے جس کا فائدہ فین انڈسٹر ی کو بھی ہوگا۔اس موقع پر پیفما کے چیئرمین مسٹر اظہر اسلم نے بتا یا کہ اس وقت ملک میں 450 کے لگ بھگ فین بنانے والے کارخانے ہیں جن میں کل 80 ملین یونٹ تیار ہوتے ہیں جبکہ چالیس پچاس کے لگ بھک کارخانے اپنے پنکھے مشرق وسطیٰ، افغانستان، بنگلہ دیش اور افریقی ممالک کو برآمد کر کے سالانہ تقریباََ چالیس ملین ڈالر کا زر مبادلہ کما رہے ہیں۔لیکن ایکسپورٹ مارکیٹ میں ہمسایہ ممالک بالخصوص چین کی طرف سے انہیں شدید چیلنج کا سامنا ہے جس کیلئے فین انڈسٹری کو جدید پیمانے پر اپ گریڈ کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ انہوں نے امید کی کہ سمیڈ ا کی مدد سے وقت کا یہ اہم تقاضہ پورا ہوسکے گا۔

مزید : کامرس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...