دودھ، گوشت کی پیداوار میں اضافہ سے کسان خوشحال ہو گا،نبیل عارف

دودھ، گوشت کی پیداوار میں اضافہ سے کسان خوشحال ہو گا،نبیل عارف

لاہور(جنرل رپورٹر)پنجاب لائیو سٹاک اینڈ ڈیری ڈویلپمنٹ بورڈ نے فیصلہ کیا ہے کہ ایک سال میں پنجاب کے16اضلاع جن میں قصور، ناروال ، سیالکوٹ، جھنگ، خوشاب، چنیوٹ، مظفر گڑھ، ڈی جی خان، لیہ، بھکر، میانوالی ، منڈی بہاﺅالدین ، پاکپتن، حافظ آ باد، جہلم، خوشاب اور راجن پور شامل ہیں، اعلیٰ معیار کے بیرون ملک سے درآ مد شدہ سیمن ہولسٹن فریزین کے ذریعے ایک لاکھ سے زائد گائیوں کی مصنوعی نسل کشی کرے گا جس سے صوبے میں دودھ اور گوشت کی پیداوار میں خاطر خواہ اضافہ ہو گا اور کسان خوشحال ہو گا۔اس بات کا فیصلہ گزشتہ روز ایک مقامی ہوٹل میں ہونیوالے فیلڈ کو آرڈینیٹرز کے اجلاس میں کیا گیا جس کی صدارت پروجیکٹ کے جنرل مینجر محمد فاروق کر رہے تھے۔اجلاس کے اختتامی سیشن سے خطاب کرتے ہوئے مہمان خصوصی چیف ایگزیکٹیو آ فیسرنبیل عارف کا کہنا تھا کہ بورڈ کا تربیت یافتہ عملہ مویشی پال کسانوں کی رہنمائی کر رہا ہے اور ان کو جانوروں کےلئے اعلیٰ معیار کا سیمن فراہم کر رہا ہے تا کہ اعلیٰ نسل کے جانوروں سے دودھ اور گوشت کی زیادہ پیداوار حاصل ہو سکے۔ انہوں نے کہا کہ بورڈ کسانوں کو گارنٹی کے ساتھ True to type بیرون ممالک سے درآ مد شدہ سیمن مارکیٹ سے کم قیمت پر فراہم کر رہا ہے ، کسانوں کو بھی چاہیے کہ وہ ہمیشہ تصدیق شدہ سیمن استعمال کریں تاکہ اعلیٰ نسل کے جانور حاصل کئے جا سکیں۔اس موقع پر جنرل مینجر محمد فاروق نے فیلڈ کو آ ڈینیٹرز سے خطاب کیا اور تمام سٹا ف کو تاکید کی کہ کسانوں کو ہر ممکن سہولیات فراہم کی جائیں۔اجلاس میں تمام اضلاع کے کوآ رڈینیٹرز نے شرکت کی اور منصوبے کے بارے میں اپنے خیالات کا اظہار کیا۔

 نبیل عارف

مزید : صفحہ آخر