خاتون مردہ ماں کی لاش کے ساتھ 5سال تک سوتی اور کھاتی پیتی رہی

خاتون مردہ ماں کی لاش کے ساتھ 5سال تک سوتی اور کھاتی پیتی رہی

برلن (نیوز ڈیسک) کسی پیارے کی موت بلاشبہ ایک عظیم سانحہ ہوتا ہے جس کے دل و دماغ پر گہرے اثرات مرتب ہوتے ہیں لیکن بعض اوقات یہ غم ناقابل یقین صورت بھی اختیار کرسکتا ہے۔جرمن شہر میونخ میں ایک ایسا ہی دلخراش واقعہ سامنے آیا ہے جہاں ایک خاتون نے اپنی مردہ ماں کی لاش کو دفنانے کی بجائے اپنے بستر پر ہی رکھ چھوڑا اور پھر اگلے پانچ سال اس کے ساتھ ہی رہتی، سوتی اور کھاتی پیتی رہی۔ علاقے کے لوگوں کی ایک دوسرے سے لاتعلقی کا بھی یہ عالم تھا کہ 83 سالہ خاتون کے مرنے کا کسی کو علم نہ ہوا۔ اس کی 55 سالہ بیٹی نے کسی کو بھی خبر نہ کی اور ماں کی لاش کو اپنے کمرے میں ہی رکھ لیا۔ اس نے 2009ءمیں ماں کے مرنے سے لے کر چند دن پہلے تک زندگی اسی طرح جاری رکھی جیسے وہ ماں کی موجودگی میں جاری رکھے ہوئے تھی بس فرق یہ تھا کہ اب اس کی ماں ہر وقت اس کے بستر پر ساکت حالت میں موجود تھی۔ بالآخر جب ہمسایوں کو فکر ہوئی کہ کئی سال سے بڑی اماں کو نہیں دیکھا تو پوچھ گچھ شروع ہوئی۔ خاتون نے کسی کو بھی گھر آنے کی کبھی اجازت نہ دی تھی اور جب وہ اپنی والدہ کے متعلق کوئی مناسب جواب نہ دے سکی تو بالآخر پولیس کو زبردستی گھر میں داخل ہوکر تلاشی لینا پڑی۔ مردہ خاتون کا جسم گل سڑ چکا تھا اور صرف ہڈیوں کا پنجر باقی تھا۔پولیس کا خیال ہے کہ مردہ خاتون کی بیٹی صدمے سے ذہنی مسائل کا شکار ہوگئی تھی اس لئے اسے دماغی امراض کے ہسپتال بھیج دیا گیا ہے۔

مزید : صفحہ آخر