پنجاب کابینہ کا چنیوٹ میں معدنی ذخائر کی تلاش میں پیش رفت پر اظہار اطمینان

پنجاب کابینہ کا چنیوٹ میں معدنی ذخائر کی تلاش میں پیش رفت پر اظہار اطمینان

 لاہور(پ ر)وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی زیر صدارت یہاں پنجاب کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں سیلاب متاثرین کودوسرے مرحلے میں مالی امداد کی فراہمی کا جائزہ لیا گیا۔اجلاس میں لوکل گورنمنٹ کی کمرشل پراپرٹیز/شاپس کی لیزمیں توسیع کی پالیسی کی اصولی منظوری جبکہ پنجاب کریمنل پراسیکوشن سروس ایکٹ2006ء اورپی ایچ اے ایکٹ 2012ء میں ترامیم کی منظوری دی گئی۔ لیبر پالیسی 2014ء اورپنجاب سینی ٹیشن پالیسی کی متعلقہ کابینہ کمیٹیوں کے جائزے کے بعد آئندہ صوبائی کابینہ کے اجلاس میں منظوری کے لئے پیش کی جائیں گی۔کابینہ کے اجلاس میں چنیوٹ میں معدنی ذخائر کی تلاش کے منصوبے میں پیش رفت کے بارے میں ابتدائی خوشخبری پر اظہار اطمینان اور وزیراعلیٰ شہبازشریف کی متحرک قیادت کو خراج تحسین پیش کیا گیا اور انہیں مبارکباد دی گئی۔اجلاس میں سیلاب متاثرین کی بھرپور مددکرنے پر پنجاب حکومت ، صوبائی وزراء،اراکین ا سمبلی، چیف سیکرٹری، سیکرٹریز ، متعلقہ اداروں کے سربراہان ، ضلعی انتظامیہ اور پوری ٹیم کو خراج تحسین پیش کیا گیا اور اس حوالے سے متفقہ قرارداد منظور کی گئی ۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے کہاکہ چنیوٹ میں معدنی ذخائر کی تلاش کے منصوبے میں پیشترفت کے بارے میں ابتدائی خوشخبری ملی ہے اور چینی کمپنی نے ڈرلنگ کے ذریعے حاصل ہونے والے قدرتی ذخائر کے نمونوں کو حوصلہ افزاء قرار دیا ہے ۔ بلاشبہ معدنی ذخائر کی تلاش میں یہ پیشرفت قوم کے لئے ابتدائی خوشخبری ہے۔انہوں نے کہاکہ زمین میں چھپے معدنی خزانے ہمارے لئے تیل یا گیس سے کم نہیں اورانشاء اﷲ زمین میں چھپے یہ خزانے ملک وقوم کی ترقی و خوشحالی کے ضامن ثابت ہوں گے ۔ انہوں نے کہاکہ دور آمریت میں چنیوٹ کے معدنی ذخائر کے حوالے سے بدترین مجرمانہ غفلت کا مظاہر ہ کیا گیااور صرف من پسند افراد کو نوازنے کی پالیسی نے قومی اہمیت کے اہم منصوبے کو تاخیر کا شکار کیا ۔ انہوں نے کہاکہ کتنے دکھ او رافسوس کی بات ہے کہ ہماری زمین میں قیمتی خزانے چھپے ہوئے ہوں اور ان کی تلاش اور استعمال میں لانے کے لئے سنجیدہ اقدامات کرنے کی بجائے کشکول گدائی اٹھائے مارے مارے پھر رہے ہوں۔وزیراعلی نے کابینہ کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ یہ کمیٹی معدنی ذخائر کی تلاش کے حوالے سے تمام حقائق سامنے لائے گی اور اس کمیٹی میں صوبائی وزراء کے علاہ سرکاری حکام اور اس شعبے کے ماہرین بھی شامل ہوں گے او رآئندہ کے لئے اس ضمن میں آگے بڑھنے کے حوالے سے لائحہ عمل طے کرے گی۔سیلاب زدگان کو مالی امداد کی فراہمی کا تذکرہ کرتے ہوئے وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے کہا کہ اب تک پونے 3 لا کھ سیلاب متاثرین کو دوسرے مرحلے میں پونے 10ارب روپے کی مالی امداد ادا کی جا چکی ہے اور مالی ا مداد کا دوسرا مرحلہ آئندہ چند روز میں مکمل کر لیا جائے گا۔انہوں نے کہاکہ پنجاب حکومت نے 16ارب روپے کے تاریخی پیکیج کے ذریعے متاثرین کی بحالی اور آباد کاری کومہینوں کی بجائے دنوں میں یقینی بنایاہے۔پنجاب حکومت نے انتہائی قلیل مد ت میں سیلاب متاثرین کو مالی امداد فراہم کر کے نئی تاریخ رقم کی ہے اور سیلاب متاثرین میں مالی امداد کی تقسیم کے نظام کو عالمی ادار وں نے بھی فول پروف اور انتہائی شفاف قرار دیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ وسائل قوم کی امانت ہیں اور ان میں کسی بھی قسم کی خورد برد امانت میں خیانت ہوگی ۔سیلاب متاثرین کی مالی امداد کی تقسیم میں کسی قسم کی نا انصافی یا زیادتی کسی صورت برداشت نہیں ، حقداروں کو ان کا حق پہنچارہے ہیں۔وزیراعلیٰ نے لوکل گورنمنٹ کی پٹہ داری پالیسی میں توسیع کی اصولی منظوری دیتے ہوئے ہدایت کی کہ کابینہ کمیٹی اس پالیسی کا جائزہ لے کر اسے جلد حتمی شکل دے۔قبل ازیں سینئر ممبر بورڈ اف ریونیو اور ڈائریکٹر جنرل پی ڈی ایم اے نے سیلاب متاثرین کو خادم پنجاب امدادی پیلیج کے تحت دوسرے مرحلے میں مالی امداد کی فراہمی کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی۔سیکرٹری لوکل گورنمنٹ نے پٹہ داری پالیسی میں توسیع ، سیکرٹری پراسیکوشن نے پنجاب کریمنل پراسیکوشن سروس ایکٹ2006ء اورسیکرٹری ہاؤسنگ نے پی ایچ اے ایکٹ 2012ء کی ترامیمی بلوں کے خدوخال پر روشنی ڈالی ۔اجلاس میں صوبائی وزراء ،مشیران،معاون خصوصی،چیف سیکرٹری،متعلقہ سیکرٹریز اوراعلی حکام نے شرکت کی۔ اجلاس میں صوبائی وزیر خزانہ و ایکسائز اینڈ ٹیکسیشن میاں مجتبیٰ شجاع الرحمن کی ہمیشرہ کے انتقال پر مرحومہ کی روح کے ایصال ثواب کے لئے فاتحہ خوانی کی گئی اور ان کے درجات کی بلندی کے لئے دعا کی گئی۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے پاکستان میں ٹیلی نار کے چیف ایگزیکٹو آفیسر مائیکل پیٹرک فولے (Mr. Michael Patrick Foley) نے ملاقات کی۔ ملاقات میں ٹیلی کمیونیکیشن کے شعبہ کی ترقی کے حوالے سے مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیراعلیٰ شہباز شریف نے ٹیلی نار کے چیف ایگزیکٹو آفیسر سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ وقت جدت، انفرادیت اور سپیڈ کا ہے اور تیز رفتار ترقی کیلئے جدید ٹیکنالوجی کا حصول انتہائی ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے ملک میں 3-G اور-G 4 ٹیکنالوجی متعارف کرائی ہے جس سے ٹیلی کمیونیکیشن کے شعبہ میں بہتری آئی ہے۔ پنجاب میں تعلیم، صحت، پولیس، لینڈ ریکارڈ اور دیگر اہم شعبوں میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کو فروغ دیا گیا ہے اور حکومت نے جدید ٹیکنالوجی کے ذریعے مانیٹرنگ کا جامع نظام وضع کیا ہے جس سے اداروں کی کارکردگی میں اضافہ ہو رہا ہے۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف سے ترکی کی معروف کمپنی اینٹاکے صدراوزی سیزر نے ملاقات کی۔ ترک کمپنی کی جانب سے پنجاب میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے منصوبے لگانے میں دلچسپی کا اظہار کیا گیا۔ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف سے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت نے شہریوں کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی کیلئے جامع منصوبہ بندی کی ہے۔ ترک کمپنی کی جانب سے صاف پانی کی فراہمی کے منصوبے میں تعاون کا خیرمقدم کرتے ہیں۔ ترک کمپنی کے تعاون سے پنجاب میں 5 واٹر فلٹریشن پلانٹس کا پائلٹ پراجیکٹ شروع کیا جائے گا اور اس پائلٹ پراجیکٹ کو تیزی سے مکمل کیا جائے گا۔ حکومت پنجاب پائلٹ پراجیکٹ کے تحت واٹر فلٹریشن پلانٹس اپنے وسائل سے لگائے گی۔ وزیراعلیٰ نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ پائلٹ پراجیکٹ کو مقررہ مدت کے اندر ہر صورت مکمل کیا جائے ۔ ترک کمپنی کے صدر اوزی سیزر نے کہا کہ ان کی کمپنی پنجاب میں پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے منصوبے لگانے میں دلچسپی رکھتی ہے اور ایک واٹر فلٹریشن پلانٹ 15 سے 20 دیہات کو پینے کے صاف پانی کی ضروریات کو پورا کر سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پائلٹ پراجیکٹ کو وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کے ویژن کے مطابق جلد سے جلد مکمل کریں گے۔ایم این اے حمزہ شہباز، صوبائی وزیر ہاؤسنگ تنویر اسلم ملک، چیئر پرسن صاف پانی کمپنی ایم پی اے عائشہ غوث پاشا،چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، سیکرٹری ہاؤسنگ، چیف ایگزیکٹو آفیسر صاف پانی پراجیکٹ ، ڈی جی ایل ڈی اے اور دیگر متعلقہ حکام بھی اس موقع پرموجود تھے

مزید : صفحہ اول

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...