ریونیو افسران کی ہوم اضلاع میں تعیناتی پر ایک بار پھر پابندی لگا دی گئی

ریونیو افسران کی ہوم اضلاع میں تعیناتی پر ایک بار پھر پابندی لگا دی گئی ...

                           لاہور (عامر بٹ سے)سیاسی شخصیات سے قریبی وابستگی اور مفادات کے حصول کےلئے اختیارات کے ناجائز استعمال کی اطلاعات نے سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو پنجاب کو نوٹس لینے پر مجبور کر دیا،ریونیو افسران کی ہوم اضلاع میں تعیناتی پر ایک بار پھر پابندی لگادی گئی ،روزنامہ پاکستان کو ملنے والی معلومات کے مطابق پرکشش علاقہ جات میں جائیدادیں بنانے ،کرپشن ِ،اختیارات کا ناجائز استعمال اور انٹی کرپشن سمیت دیگر احتسابی اداروں میں اندراج مقدمات میں ملوث ہونے کے الزامات کا شور ایک پھر زور پکڑ گیا،سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو پنجاب نے ہوم اضلاع میں تعینات ریونیو افسران کی تعیناتی کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے ہوم اضلاع میں تعینات ریونیو افسران کو ضلع بدر کرنے کی ہدائت کر دی ،مزید معلوم ہوا ہے کہ قبل ازیں 12مارچ 2012کو بھی چیف سیکریٹری پنجاب ناصر محمود کھوسہ کی جانب سے ہوم اضلاع میں تعینات ریونیو افسران کو ضلع بدر کر دیا گیا تھا تاہم بعد ازاں ریونیو افسران کی جانب سے کافی تگ و دو کرنے کے بعد محتسب پنجاب کی جانب سے ایک فیصلہ جاری کیا گیا جس پر عمل دارآمد کرتے ہوئے بورڈ آف ریونیو پنجا ب نے اجازت دیدی تاہم دو سال کا عرصہ گزر جانے کے بعد اور ایک بار پھر ریونیو افسران کی ہوم اضلاع میں تعیناتی کی پریکٹس کو کالعدم قرار دیدیا گیا ہے ریونیو ذرائع کا کہنا ہے کہ یہ الزامات ریونیو افسران کی سیاسی شخصیات سے قریبی وابستگی اختیارات کے ناجائز استعمال رشوت وصولی اور عوام الناس کو بلاوجہ کے اعتراضات سے تنگ کرنے کی شکایات بتائی جارہی ہیں ،جس کا بالآخر سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو پنجاب نے نوٹس لے لیا ہے دوسری جانب ریونیو افسران کی کہنا ہے کہ ان الزامات میں کوئی صداقت نہ ہے بلکہ ہوم اضلاع میں تعیناتی کے باعث ریونیو ریکارڈ کی درستگی سے لیکر ریکوری اور فیلڈ سے وابستہ انتظامی کاموں میں ہوم اضلاع تعینات ریونیو افسران کی وجہ سے فوائد حاصل ہیں ہمیں بدنام کرنے کی سازش کی جارہی ہے جو جا رہے ہیں وہ بھی پریشان ہیں اور جو دوسرے اضلاع میں اپنا گھر بار چھوڑ کر آ رہے ہیں وہ بھی پریشان ہیں، ایسے اقدامات سے حکومت کو فائدہ ہونے کی بجائے الٹا نقصان ہو گا۔

سیاسی وابستگی

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...