تحریک انصاف کے جلسہ کیخلاف درخواست سماعت کیلئے منظور ،عمران وفاقی صوبائی حکومت کو نوٹس جاری

تحریک انصاف کے جلسہ کیخلاف درخواست سماعت کیلئے منظور ،عمران وفاقی صوبائی ...

                          لاہور (نامہ نگار خصوصی )لاہور ہائیکورٹ کے فل بنچ نے تحریک انصاف کے 30 نومبر کے جلسہ کے خلاف درخواست باقاعدہ سماعت کے لئے منظور کرتے ہوئے قرار دیا ہے کہ حکومت نے دھرنا روکنے سے متعلق عدالت عالیہ کے گزشتہ فیصلے کو نظرانداز کیا، آئین اور عدالتوں کے ساتھ مذاق کیا جا رہا ہے،اگر حکومت نے عدالتی فیصلوں پر عملدرآمد نہیں کرنا تو عدالتیں بند کر دینی چاہیں، فل بنچ نے عمران خان، وفاقی اور صوبائی حکومت کو 24نومبر کے لئے نوٹس جاری کر دیئے ہیں ۔مسٹر جسٹس خالد محمود خان، مسٹر جسٹس شاہد حمید ڈار اور مسٹر جسٹس انوار الحق پر مشتمل تین رکنی فل بنچ نے گزشتہ روز شہری ایم ایچ مجاہد کی درخواست پر سماعت شروع کی تو درخواست گزار کے وکیل اے کے ڈوگر نے کہا کہ تحریک انصاف نے 30 نومبر کو دھرنے کے ذریعے حکومت کا تختہ الٹنے کا اعلان کیا ہے جس پر فل بنچ نے کہا کہ جب حکومت اور دوسری پارٹی اس بات پر متفق ہیں کہ پرامن دھرنے پر کوئی اعتراض نہیں تو پھر آپ کو کیا اعتراض ہے ، اس پر اے کے ڈوگر نے کہا کہ عدالت نے یہ نہیں دیکھنا کہ کس فریق نے کیا بیان دیا بلکہ عدالت نے آئین کے مطابق فیصلہ کرنا ہے ، فل بنچ نے کہا کہ آئین کے ساتھ تو مذاق کیا جا رہا ہے ، عدالت نے 14اگست کے دھرنے کے خلاف حکم امتناعی جاری کیا مگر حکومت نے عدالتی فیصلہ نظر انداز کر دیا، عدالتوں کے ساتھ بھی مذاق کیا جا رہا ہے، اگر حکومت نے عدالتی فیصلوں پر عملدرآمد نہیں کرنا تو عدالتیں بند کر دینی چاہیں، فل بنچ نے مزید قرار دیا کہ آئین پر ہر قیمت پر عمل ہونا چاہے، فل بنچ نے شہری ایم ایچ مجاہد کی درخواست باقاعدہ سماعت کے لئے منظور کرتے ہوئے عمران خان ، وفاقی اور صوبائی حکومت کو 24نومبر کیلئے نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کر لیا۔

درخواست منظور

مزید : صفحہ آخر