'مسلم مقابلہ حسن' جیتنے والی حسینہ کا قابل تحسین مطالبہ

'مسلم مقابلہ حسن' جیتنے والی حسینہ کا قابل تحسین مطالبہ
'مسلم مقابلہ حسن' جیتنے والی حسینہ کا قابل تحسین مطالبہ

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

جکارتہ(نیوز ڈیسک)عالمی مقابلہ حسن کے برعکس انڈونیشیا میں مسلم مقابلہ حسن کا انعقاد کیا گیا جس میں 25سالہ فاطمہ بن غفراشی فاتح قرار پائی ہیں ۔

پچھلے سال عالمی مقابلہ حسن کا انعقاد انڈونیشیا کے جزیرے بالی پر کیا گیا جس کیخلاف احتجاج کرنے کے لیے پہلی دفعہ " ورلڈ مسلم ایورڈ"کا آغاز کیاگیااور اس سال اسے باقاعدہ مسلم مقابلہ حسن کا رنگ دیا گیا۔

دنیا کے عجیب ترین مقابلہ حسن

مقابلے میں شریک خواتین کا انتخاب ظاہری شکل وصورت کے بجائے کردار ،سیرت،اسلامی تعلیمات پر دسترس اور حسن سلوک جیسی خوبیوں کی بنیا د پر کیا گیا ۔مقابلے میں شریک خواتین نے سکارف پہن رکھے تھے اور ان سے مذہبی سوالات بھی کیے گئے۔مقابلے کے منتظم جامےا شریف نے بتایا کہ خواتین کی بڑی تعداد شرکت کی خواہاں تھیں اور سخت مسائل کے باوجود بھی یہ اس میں شامل ہوئیں۔

سنگا پور سے ایک استانی اپنی ملازمت چھوڑ کر مقابلے میں شریک ہوئیں۔فاتحہ خاتون کا تعلق تیونس سے ہے اورانہیں انعام میں سونے کی گھڑی، سونے کا دیناراور عمرے کا ٹکٹ دیا گیا ۔انہوں نے فتح کے موقع پر فلسطین کی آزادی کے لیے دعابھی کی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس