بنگلہ دیش میں متحدہ پاکستان کے حامیوں کو سزائیں دینے کے خلاف مظاہرہ

بنگلہ دیش میں متحدہ پاکستان کے حامیوں کو سزائیں دینے کے خلاف مظاہرہ

لاہور(پ ر) نظریۂ پاکستان ٹرسٹ کے زیر اہتمام ایوان کارکنان تحریک پاکستان ،شاہراہ قائداعظمؒ لاہور میں بنگلہ دیش کی بھارت نواز حکومت کی طرف سے متحدہ پاکستان کے حامیوں کو سزائیں دینے کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔ اس مظاہرہ میں نظریۂ پاکستان ٹرسٹ کے وائس چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد، تحریک تکمیل پاکستان کے مرکزی صدر و سابق چیف جسٹس وفاقی شرعی عدالت میاں محبوب احمد، بیگم صفیہ اسحاق، فاروق خان آزاد،شاہد رشید ،نظریۂ پاکستان ٹرسٹ و تحریک پاکستان ورکرز ٹرسٹ کے عہدیداران و کارکنان سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے اس موقع پرگفتگو کرتے ہوئے کہا پاکستان بنانے میں بنگال کے مسلمانوں نے بھرپور حصہ لیااُس وقت ایک پاکستان تھا اور بنگلہ دیش کا کوئی تصور نہیں تھااب بھی ایک پاکستان ہماری منزل ہے۔ بنگلہ دیش میں شیخ مجیب کی بیٹی حسینہ واجد متحدہ پاکستان کے حامیوں کو ظلم و ستم کا نشانہ بنا رہی ہے حالانکہ وہ خود پاکستان کی غدار ہے اور پاکستان سے غداری کرنیوالوں کو پھانسی کی سزا ملنی چاہئے۔اقوام عالم بنگلہ دیش میں متحدہ پاکستان کے حامیوں کو سزائیں دینے کا نوٹس لے۔ حسینہ واجد کو اپنے باپ مجیب الرحمان کا انجام یاد رکھنا چاہئے۔ چیف جسٹس(ر) میاں محبوب احمد نے کہا کہ ہمیں نسلِ نو کو ہندو ذہنیت سے آگاہ کرنا چاہئے، بنگلہ دیش کے قیام میں وہاں کے مسلمانوں کا نہیں بلکہ ہندوؤں کا ہاتھ تھا۔ بھارت میں نریندر مودی حکومت کی انتہا پسندانہ پالیسیاں اور بنگلہ دیش میں متحدہ پاکستان کے حامیوں کو سزائیں نظریۂ پاکستان کی تقویت کا باعث بن رہے ہیں۔ مظاہرین نے’’ حسینہ واجد مردہ باد، بھارت کا جویار ہے غدار ہے غدار ہے اور متحدہ پاکستان کے حامیوں پر ظلم بند کرو ‘‘کے نعرے بھی لگا ئے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1