افغانستان اور پاکستان میں طالبان کا ظہور پورے جنوبی ایشیا کا معاملہ بن چکا ، اشرف غنی

افغانستان اور پاکستان میں طالبان کا ظہور پورے جنوبی ایشیا کا معاملہ بن چکا ، ...

آستانہ(آئی این پی )افغانستان کے صدر ڈاکٹر اشرف غنی نے کہا ہے کہ طالبان افغانستان اور پاکستان میں پیدا کیے جانے والا ایک ایسا ظہور ہے جو اب پورے جنوبی ایشیا کا معاملہ بنتا جارہا ہے ،طالبان کی سرگرمیاں بنگلہ دیش سمیت دیگر ممالک تک پھیل چکی ہیں۔ہفتہ کو قازقستان کے دارالحکومت آستانہ میں زیر تعلیم افغان طالب علموں سے خطاب کرتے ہوئے افغان صدر اشرف غنی نے کہاکہ افغانستان میں چینی ،روسی ،ازبک ،سعودی ،قازقستان ،افریقن اور پاکستانی جنگجو لڑ رہے ہیں۔ افغانستان دہشتگردی کیخلاف جنگ میں قربانیاں دے رہا ہے لیکن یہ افغانوں کا اندرونی معاملہ نہیں ہے۔انکا کہناتھاکہ طالبا ن ہتھیار ڈال کر الیکشن میں حصہ لیں اگر عوام انھیں ووٹ دیتے ہیں تو میں خوشی سے اقتدار چھوڑ رکر انکے حوالے کردوں گا تاہم قندوزمیں طالبان کی حالیہ سرگرمیوں کے باعث بدقسمتی سے تشددحد سے بڑھ چکا ہے۔انھوں نے کہاکہ دہشتگردی اور انتہا پسندی کیخلاف جاری جنگ نے انکی توجہ اپنے پروگراموں کے اطلاق کے بجائے سیکورٹی کی طرف بڑھا دی ہے۔31ممالک نے افغانستان کے ساتھ فوجی امداد کا وعدہ کیا ہے اور رواں سال کے آخر تک تعداد 40ہوجائے گی۔

مزید : علاقائی