پاکستان سےمحبت جرم ٹھہرا، جماعت اسلامی اور بنگلہ دیش نیشنل پارٹی کے دورہنما ؤں کو پھانسی دیدی گئی

پاکستان سےمحبت جرم ٹھہرا، جماعت اسلامی اور بنگلہ دیش نیشنل پارٹی کے دورہنما ...
پاکستان سےمحبت جرم ٹھہرا، جماعت اسلامی اور بنگلہ دیش نیشنل پارٹی کے دورہنما ؤں کو پھانسی دیدی گئی

  

  ڈھاکہ( مانیٹرنگ ڈیسک) بنگلہ دیش میں جماعت اسلامی اور بنگلہ دیش نیشنل پارٹی کے دو رہنماوں کو پھانسی دیدی گئی۔ ان رہنماوں کی اپیلوں کو بنگلہ دیش کے صدر نے مسترد کر دیا تھا۔ علی ا حسن مجاہد اور صلاح الدین چودھری پر جنگی جرائم میں ملوث ہونے کا الزام تھا۔ان پر 1971کی جنگ میں پاکستان کی مدد کرنے کا الزام بھی لگایا گیا تھا۔اس سے پہلے سوشل میڈیا پر ان دونوں کی سزا پر عمل درآمد نہ کرنے کی اپیلیں بھی کی گئیں لیکن بنگلہ دیش کی حکومت باز نہ آئی اور ان کو پاکستانی وقت کے مطابق رات 12بجے پھانسی دی گئی۔یاد رہے کہ صلا ح الدین نے 1986میں پہلا الیکشن لڑا تھا جس میں وہ کامیاب نہ ہوسکے تھے۔2001میں کامیابی کے بعد وہ بنگلہ دیش کی حکومت میں 2007تک وزیر بھی رہے۔دوسری طرف علی احسن مجاہد نے سزائے موت کا فیصلہ نہایت تحمل اورحوصلے سے سنا اور اپنے بیٹے کو جوپیغام دیا وہ نہایت جرات و ہمت کے مالک شخص کا ہی بیان ہوسکتا ہے۔ انہوں نے اس مقدمے کو مکمل طور پرمسترد کرتے ہوئے اسے حکومتی انتقام کا شاخسانہ قراردیا۔علی احسن مجاہد کا کہنا تھا کہ سزائے موت میرے لیے کوئی وقعت نہیں رکھتی اور نہ پریشانی کا باعث ہے میں نے اپنی زندگی میں کسی بے گناہ فرد کو قتل نہیں کیا اور نہ کسی ایسے گناہ کے ارتکاب میں شریک ہوا۔ یہ حکومت کی باطنی نفرت، سیاسی انتقام،جھوٹ اور بدنیتی پر مبنی الزامات اور نام نہاد عدالت کا نام نہاد فیصلہ ہے۔ جسے میں مکمل طور پر مسترد کرتا ہوں۔ میں اللہ کے دین کی خدمت ، سربلندی کے لیے اپنی جان دینے کو ہر لمحہ تیار تھاتیارہوں۔اللہ مجھے اس راستے پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے۔

مزید : صفحہ اول