افغان طالبان کا مفاہمتی عمل دوبارہ شروع کرنے کا فیصلہ

افغان طالبان کا مفاہمتی عمل دوبارہ شروع کرنے کا فیصلہ

کابل (آئی این پی) افغان طالبان نے مفاہمتی عمل پر مشتمل سیاسی مذاکرات کو دوبارہ شروع کرنے کا فیصلہ کرلیا،شیر محمد عباس ستنگزئی کو سیاسی دفتر کا باقاعدہ سربراہ مقرر کر دیا گیااور مولوی عبدالسلام حنفی کو سیاسی دفتر کا نائب مقرر کر دیئے گئے ہیں۔غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق افغان طالبان نے سیاسی مذاکراتی عمل دوبارہ شروع کرنے کافیصلہ کیا ہے۔ اس حوالے سے شیر محمد عباس ستنگزئی کو سیاسی دفتر کا باقاعدہ سربراہ مقرر کر دیا گیااور مولوی عبدالسلام حنفی کو سیاسی دفتر کا نائب مقرر کر دیئے گئے ہیں، جس کے بعد مذاکراتی عمل جلد شروع ہونے کی توقع ہے،سیاسی دفتر کے سربراہ اور نائب سربراہ کا انتخاب رہبری شوریٰ کے اجلاس میں کیا گیا۔ افغان طالبان کے ترجمان کے مطابق سید طیب آغا کے استعفے کے بعد شیر محمد عباس سیاسی دفتر کے نگران تھے۔واضح رہے کہ کچھ عرصہ قبل افغان حکومت اور طالبان میں مفاہمتی عمل شروع ہوا تھا،پاکستان نے مصالحتی عمل میں ثالثی کا کردار ادا کیا تھا، مذاکرات کے دو دورمری میں ہوئے تھے تاہم ملا عمر کی انتقال کے خبر کے بعد افغان مفاہمتی مذاکراتی عمل معطل ہو گیا تھا۔یاد رہے کہ پاکستان نے افغان مفاہمتی عمل کی بھرپور حمایت کی اور اس سلسلے میں اپنا کردار ادا کیاتھا

مزید : صفحہ اول