امین فہیم9 193کو ’’ہالہ‘‘ میں پیدا ہوئے،8 مرتبہ ممبر قومی اسمبلی رہے

امین فہیم9 193کو ’’ہالہ‘‘ میں پیدا ہوئے،8 مرتبہ ممبر قومی اسمبلی رہے

کراچی(آئی این پی) پاکستان پیپلز پارٹی کے سینئر رہنما اور سروری جماعت کے روحانی پیشوا مخدوم امین فہیم 4اگست 1939کو ہالہ سندھ میں پیدا ہوئے انھوں نے یونیورسٹی آف سندھ سے پولیٹیکل سائنس میں ماسٹرز کی ڈگری حاصل کی۔مخدوم امین فہیم نے 1970 میں سیاست کا آغاز کیا اور 1977 سے لے کر 2013 تک مسلسل 8 مرتبہ ممبر قومی اسمبلی رہے۔ امین فہیم وزیر مواصلات و اطلاعات اور وزیر صنعت و تجارت بھی رہے۔ سابق صدر جنرل (ر)پرویز مشرف نے 2002 میں مخدوم امین فہیم کو وزیراعظم بننے کی پیشکش کی مگر مر حوم مخدوم امین فہیم نے پارٹی سے وفاداری اور جمہوریت کو تر جیح دی اور وزارت عظمہ ٰ سے انکار کر دیا۔بعد ازاں 2002 میں ہی اس وقت کے وزیر اعظم میر ظفر اللہ جمالی نے مخدوم امین فہیم سے ملاقات کی اور انکے بیٹے خلیق الز ماں کو سندھ کا وزیر اعلیٰ بنانے کی پیشکش کی مگر انہوں نے ایک بار پھر پارٹی سے غداری نہ کی اور اس عہدے سے انکار کر دیا۔2008 میں مخدوم آمین فہیم وزیر اعظم کی سیٹ کے لیے پیپلز پارٹی کی طرف سے مضبوط امیدوار تھے مگر پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی ذرداری نے خود صدر بننے کیلیے اور پارٹی میں اختلافات سے بچنے کیلئے مخدوم آمین فہیم کو وزیر اعظم کی نامزدگی سے ہٹانے کیلئے مسلم لیگ( ن) سے مدد مانگی ۔ جس کے بعد موجودہ وزیر دفاع خواجہ آصف نے مر حوم مخدوم امین فہیم کی بطور وزیر اعظم نامزدگی کی بھر پور مخالفت کی اور ان کے خلاف بہت سے ٹی وی انٹرویوز دئیے جس پر پیپلز پارٹی نے مر حوم مخدوم امین فہیم کی بجائے یوسف رضا گیلانی کو وزیراعظم نامزد کر دیا۔امین فہیم کچھ عرصے تک پیپلز پارٹی سے ناراض بھی رہے ۔سابق وزیراعظم بے نظیر بھٹو کی جلا وطنی کے دور میں امین فہیم ہی پیپلز پارٹی کے تمام امور دیکھا کرتے تھے۔ مخدوم امین فہیم کے سیاسی کیر ئیر میں انکے کیخلاف کر پشن کے کیسز بھی بنتے رہے،اور عدالتوں سے انکے وارنٹ گرفتار ی بھی جاری ہوتے رہے ۔

مزید : کراچی صفحہ اول