مسلمان دہشتگرد نہیں، داعش کو تباہ کرنا حقیقی مقصد ،روس کو شام میں ترجیحات طے کرنے کی ضرورت ہے: امریکی صدر

مسلمان دہشتگرد نہیں، داعش کو تباہ کرنا حقیقی مقصد ،روس کو شام میں ترجیحات طے ...
مسلمان دہشتگرد نہیں، داعش کو تباہ کرنا حقیقی مقصد ،روس کو شام میں ترجیحات طے کرنے کی ضرورت ہے: امریکی صدر

  

کوالا لمپور(مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی صدر باراک اوبامہ نے کہا ہے کہ مسلمان نہیں بلکہ ایک چھوٹا سا گروہ دہشتگردی میں ملوث ہے۔ داعش کو تباہ کرنا ہمارا حقیقی مقصد ہے مٹھی بھر لوگوں کو پوری دنیا کو یرغمال بنانے کی اجازت نہیں دے سکتے۔ روس کو شام میں ترجیحات طے کرنے کی ضرورت ہے۔

ایشیا پیسیفک سربراہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے امریکی صدر کا کہنا تھا کہ امریکہ کی کسی مذہب سے جنگ نہیں, 100 سے زائد ممالک داعش کے خلاف جنگ میں حصہ لے رہے ہیں .ہم داعش کو ختم کرکے دم لیں گے، اس کے سربراہ کو ڈھونڈ نکالیں گے اورداعش کا جلد خاتمہ کردیا جائے گا ۔ داعش کے خلاف عالمی برادری کو متحد ہوکر کارروائی کرنا ہوگی خوشی کی بات ہے کہ امریکی فوج دہشتگردی سے نمٹنے کیلئے پوری طرح تیار ہے مٹھی بھر دہشتگرد دنیا کو یرغمال نہیں بناسکتے۔

آسیان سمٹ سربراہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے باراک اوبامہ کا کہنا تھا کہ روس کو شام میں اپنی ترجیحات طے کرنے کی ضرورت ہے۔ روس شام میں سیاسی طریقے سے تبدیلی پر رضامند ہے ،صورتحال سے نمٹنے کیلئے مشاورت کررہے ہیں۔ داعش کے خلاف عالمی برادری کو متحد ہوکر کارروائی کرنا ہوگی ہماری کوشش ہے کہ شہریوں کو کم سے کم نقصان ہومجھے یقین ہے ہمارے اقدامات قانونی دائرہ کار کے اندر ہیں۔

انہوں نے کہا کہ صدر بشار الاسد کے مخالفین کی مدد کرکے جنگ ختم نہیں کراسکتے بشارالاسد کو اقتدار چھوڑنا ہوگاشام میں نئی سیاسی حکومت کی ضرورت ہے۔دہشتگردوں کا نیٹ ورک توڑنے کیلئے صلاحیت موجود ہے امریکہ داعش کو مالی وسائل کی فراہمی روکے گا دہشتگردوں کی مالی معاونت ختم کرنے میں سعودی عرب تعاون کررہا ہے۔

مزید : بین الاقوامی /Headlines