عرب ملک میں غیر ملکی کا پاسپورٹ واپس نہ کرنے والے کفیل کے خلاف عدالت نے ایسا حکم جاری کردیا کہ ہر غیرملکی خوشی سے جھوم اُٹھا

عرب ملک میں غیر ملکی کا پاسپورٹ واپس نہ کرنے والے کفیل کے خلاف عدالت نے ایسا ...
عرب ملک میں غیر ملکی کا پاسپورٹ واپس نہ کرنے والے کفیل کے خلاف عدالت نے ایسا حکم جاری کردیا کہ ہر غیرملکی خوشی سے جھوم اُٹھا

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) عرب ممالک میں کام کرنے والے غیر ملکیوں کی یہ شکایت اکثر سننے میں آتی ہے کہ کفیل پاسپورٹ اپنے قبضے میں رکھتا ہے اور ملازم لاکھ فریاد کرتا رہے، پاسپورٹ واپس کرنا یا نہ کرنا کفیل کی مرضی پر منحصر ہوتا ہے۔ متحدہ عرب امارات میں جیل میں قید ایک یونانی شہری کے ساتھ بھی یہی معاملہ پیش آ گیا کہ عدالت کی جانب سے اسے ضمانت پر رہائی کی اجازت مل گئی لیکن کفیل نے اس کا پاسپورٹ نہ دیا، جس کی وجہ سے ضمانت بھی لٹک گئی۔ گلف نیوز کی رپورٹ کے مطابق اس شخص کو ایک آئی ٹی کمپنی کی ملازمت کے دوران 20 لاکھ درہم کی خود برد کے الزام میں تین سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ دوران قید اس کی جانب سے کی گئی اپیل کو عدالت نے منظورکرلیا اور اسے ضمانت پر رہا کرنے کا حکم دیا لیکن اس کے لئے شرط رکھی کہ اسے اپنا پاسپورٹ عدالت کے پاس جمع کروانا ہوگا۔ دوسری جانب کفیل نے تاحال اس کا پاسپورٹ فراہم نہیں کیا جس کی وجہ سے عدالت کی جانب سے حکم جاری ہونے کے باوجود یہ قید میں تھا۔ جب عدالت کو معلوم ہوا کہ معاملہ کفیل کی وجہ سے لٹکا ہوا تھا تو کفیل کو بھی پیش ہونے کا حکم جاری کر دیا گیا۔ عدالت کی جانب سے جاری کئے گئے حکم میں کہا گیا کہ کفیل خود پیش ہو کر ملازم کا پاسپورٹ پیش کرے، یا دوسری صورت میں قانونی کاروائی کا سامنا کرنے کے لئے تیار ہو جائے۔

بالاآخر وہ خوشخبری آگئی جس کا انتظار تھا، سعودی حکومت نے وعدہ پورا کر دیا، ملک میں مقیم غیر ملکیوں کے چہرے خوشی سے کھِل اُٹھے
مجرم قرار پانے والے ملازم کے وکیل نے عدالت سے استدعا کی کہ اسے کوئی دیگر دستاویز جمع کرانے کی اجازت دی جائے مگر عدالت نے ضمانت کی شرائط تبدیل کرنے سے انکار کردیا۔ عدالت کا کہنا تھا کہ کفیل کو لازمی طور پر خود پیش ہو کر پاسپورٹ اپنے سابقہ ملازم کے حوالے کرنا ہو گا۔

مزید :

عرب دنیا -