جنرل راحیل کی پالیسی میں تبدیلی آئی تو بہت بڑا نقصان اٹھانا پڑیگا : خورشید شاہ

جنرل راحیل کی پالیسی میں تبدیلی آئی تو بہت بڑا نقصان اٹھانا پڑیگا : خورشید شاہ
جنرل راحیل کی پالیسی میں تبدیلی آئی تو بہت بڑا نقصان اٹھانا پڑیگا : خورشید شاہ

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک )اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ نے کہا ہے کہ جنرل راحیل شریف کی پالیسی میں تسلسل کی ضرورت ہے اور اگر اس پالیسی میں تبدیلی آئی تو بہت بڑا نقصان اٹھانا پڑے گا۔

لاہور میں جہانگیر بدر کے اہل  خانہ سے اظہار تعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عمران خان نواز شریف کے دشمن نہیں بلکہ دوست کا کام کر رہے ہیں اور انکے ایکشن سے نوازشریف طاقتور ہورہے ہیں۔”سیاست میں جلد بازی نہیں چلتی سب کو ساتھ لے کر چلنا پڑتا ہے“۔

حکومت نے پاکستان میں شادی کرنیوالے افغان مہاجرین کیلئے نئی ویزا پالیسی لانے کا فیصلہ کر لیا

خورشید شاہ نے بتایا کہ پاناما لیکس کے معاملے پر ٹی او آر بنائے،آل پارٹیرزکانفرنس کیں لیکن عمران خان نے اسلام آباد لاک ڈاون کا اعلان کرکے اپوزیشن کوتوڑدیا۔” فیصلہ ہواتھاکہ پاناما بل منظور نہیں ہوا تو ساری جماعتیں مل کر تحریک چلاﺅں گی لیکن صبح 10 بجے پتاچلا کہ عمران خان نے لاک ڈاو¿ن کرنے کااعلان بھی کردیا“۔ جب شاہ محمود قریشی سے رابطہ کیا کہ اعلان کیسے کردیاتوانہوں نے کہا کہ انہیں بھی نہیں پتا۔

بینظیر بھٹو کا بیٹا بھی والدہ کے راستے پر چلے گا : بلاول بھٹو

ایک سوال پر اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ جنرل راحیل شریف نے مشکل وقت میں پاک فوج کی کمان سنبھالی ان کو خراج تحسین پیش کرتاہوں۔ فوج لڑی ہے اوردہشت گردوں کوپیچھے دھکیلاہے،اب اس تسلسل کی سخت ضرورت ہے۔
اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ عمران خان اور چودھری نثار کی دوستی 40سال پرانی ہے ،وزیر داخلہ نے پی ٹی آئی سربراہ کو مس گائیڈ کیا اور وہ باہر نکل آئے۔

مزید :

لاہور -