آئندہ نسلوں کو فاقہ کشی سے بچانے کیلئے آبی ذخائر کی تعمیر ناگزیر، کسان ویلفیئر کونسل

آئندہ نسلوں کو فاقہ کشی سے بچانے کیلئے آبی ذخائر کی تعمیر ناگزیر، کسان ...

  



 فیصل آباد(بیورورپورٹ) پاکستان کو صحرا بننے اور آئندہ نسلوں کو فاقہ کشی سے بچانے کیلئے فوری طور پر کالاباغ ڈیم سمیت دیگر آبی ذخائر،چھوٹے و بڑے ڈیم تعمیر کرناہوں گے لہٰذا حکومت واٹر انجینئرز و آبی ماہرین اور سیاسی قائدین کی کانفرنس طلب کر کے صوبوں کے تحفظات دور کرنے کے لئے اقدامات کرے تاکہ اگر کسی صوبے یا سیاسی جماعت کو کالا باغ ڈیم کی تعمیر کے بارے میں کسی قسم کے تحفظات ہیں تو انہیں تکنیکی طور پر دور کرنے سمیت قائل کرتے ہوئے متفقہ رائے سے فوری طور پر ڈیمز کی تعمیر کا عملی کام شروع کرنے میں مد د مل سکے۔ پاکستان کسان ویلفیئر کونسل کے ترجمان نے کہا کہ کالا باغ ڈیم کی تعمیر سے سب سے زیادہ فائدہ صوبہ سندھ کو پہنچے گا جس کے لاکھوں افراد ہر سال سیلاب کی تباہ کاریوں کا شکار ہو جاتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کا شمار ان ممالک میں ہوتاہے جہاں پانی کی قلت روز بروز شدید سے شدید تر ہوتی جارہی ہے جسکی بڑی وجہ بھارت کی آبی جارحیت ہے۔ انہوں نے کہاکہ1950 ء میں پاکستان میں فی کس پانی کی دستیابی5 ہزار کیوبک میٹر تھی جو سال2019ء میں ایک ہزار کیوبک میٹر سے بھی کم ہو گئی ہے جبکہ ہر سال 35 ملین ایکڑ فٹ پانی بغیر استعمال کئے سمندر میں پھینک کر ضائع کیاجارہا ہے جس کے باعث پاکستان میں 9 ملین ہیکٹر زمین پانی کی عدم دستیابی کے باعث بالکل بیکار پڑی ہے۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان کے موجودہ آبی ذخائر کی صلاحیت 26 فیصد تک کم ہو چکی ہے۔ انہوں نے تمام سیاسی، دینی، مذہبی، علاقائی جماعتوں سے اپیل کی کہ وہ ہر قسم کے ذاتی مفادات و تعصبات سے بالاتر ہو کر بہترین قومی و ملکی مفاد میں کالاباغ ڈیم کی تعمیر میں اپنا کردار اد اکریں۔

مزید : کامرس