کار انداز کا بینک الفلاح اور ڈی جی سرووکے ساتھ معاہدہ

کار انداز کا بینک الفلاح اور ڈی جی سرووکے ساتھ معاہدہ

  



لاہور(پ ر)کار انداز پاکستان نے انوویشن چیلنج فنڈ (آئی سی ایف) کے تیسرے مرحلہ میں چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباری اداروں (ایس ایم ایز) کے لئے جدید، کیش فلو پر مبنی کریڈٹ اسکورنگ ماڈل کی تیاری کیلئے بینک الفلاح لمیٹڈ اور DigiServe کے کنسورشیم کے ساتھ معاہدے پر دستخط کئے ہیں۔ اس چیلنج کے دوران کار انداز نے ملک میں قرض فراہم کرنے والے ایس ایم ای کے لئے جدید کریڈٹ اسکورنگ ماڈلز کی جانچ اور تیاری میں دلچسپی رکھنے والے اداروں کو آئیڈیاز پیش کرنے کی دعوت دی ہے۔ بینک الفلاح پاکستان میں پانچواں بڑا نجی بینک ہے جس کی 640 سے زائد برانچیں ہیں۔ بینک الفلاح عالمی ڈیجیٹل رجحانات کے ساتھ پاکستان میں بینکنگ کے منظر نامے کو تبدیل کرنے کی کوششوں میں مصروف ہے۔ تکنیکی طور پر اعلیٰ درجے کی وسیع خصوصیات کو متعارف کراتے ہوئے بینک اپنے صارفین کو آگے بڑھنے کا نیا راستہ فراہم کرنے کا تعین کر رہا ہے۔ بینک الفلاح کا کنسورشیم پارٹنر DigiServ مہارتوں اور خدمات کے انضمام کے ساتھ مواصلاتی ٹیکنالوجی فراہم کرنے والا ادارہ ہے۔ بینک الفلاح اور DigiServ کار انداز کے تعاون کو بینک سے قرض حاصل کرنے کے خواہاں ایس ایم ای کے لئے کریڈٹ اسکورز کے حساب کتاب کے جدید طریقہ کے ڈیزائن اور جانچ کے لئے استعمال کریں گے۔ اس وقت بینک عمومی طور پر ایس ایم ایز کو قرض دینے کے حوالے سے اپنا کریڈٹ رسک پورا کرنے کے لئے کولیٹرل کا استعمال کرتے ہیں۔

اگرچہ ایس ایم ایز کا جی ڈی پی میں 30 فیصد حصہ ہے، یہ 78 فیصد غیر زرعی روزگار پیدا کرتے ہیں اور تیار شدہ اشیاء کی درآمدات میں ان کا حصہ 25 فیصد ہے، بینکوں کی بے پناہ کریڈٹ کی تشخیصی ضروریات کے باعث ان کی فنانس تک رسائی کی صلاحیت متاثر ہو رہی ہے۔ اس کے نتیجے میں ایس ایم ایز اپنی مالی ضروریات کو پورا کرنے کے لئے اپنے ذاتی وسائل یا غیر رسمی مالیاتی وسائل پر انحصار کرتے ہیں۔ کار انداز کی بینک الفلاح اور DigiServ کے ساتھ شراکت داری کے نتیجہ میں یہ اقدام کریڈٹ کی ضروریات کی تشخیص میں جمود اور ایس ایم ایز کے خطرات کو دور کرے گا اور صنعت کو روایتی اور غیر توسیع پذیر ماڈلز سے دور رکھنے میں مدد فراہم کرے گا۔ کار انداز پاکستان کے سی ای او علی سرفراز نے اس موقع پر کہا کہ ہمیں یقین ہے کہ بینک الفلاح اور DigiServ کے اس کنسورشیم کے لئے کار انداز کی مالی اعانت سے بینک کو مالیاتی شعبے میں ڈسرپشن اور جدت کے ایجنڈے کی پیروی کرنے میں مدد ملے گی اور ایس ایم ایز کو قرض دینے کے حق میں جدید کریڈٹ اسکورنگ کا ماڈل تیار کیا جائے گا۔ اس چیلنج فنڈ کے ذریعے کار انداز نے انوویٹرز کو متحرک کیا ہے تاکہ وہ چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباروں کے لئے موافق کریڈٹ اسکورنگ آئیڈیاز کے ساتھ آگے آئیں۔ چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباروں کو ایسا ماحول مہیا کرنا ہوگا جہاں باضابطہ چینلز کے ذریعہ فنانس تک رسائی آسان ہو، تاکہ وہ ترقی کر سکیں، زیادہ روزگار پیدا کرسکیں اور مجموعی معیشت کے لئے فائدہ مند بن سکیں۔ بینک الفلاح کی گروپ ہیڈ مہرین احمد نے اس موقع پر کہا کہ بینک الفلاح کو کمرشل اور ایس ایم ای فنانسنگ میں غلبہ حاصل ہے جو جدیدسلوشنز بالخصوص چھوٹے قرض دہندگان کو غیر مالیاتی مشاورتی خدمات فراہم کرتا ہے تاکہ انہیں آگے بڑھنے میں مدد مل سکے۔ ہم کار انداز پاکستان اور اس کے بنیادی سپانسر برطانیہ کے ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (ڈی ایف آئی ڈی) کے مشکور ہیں کہ انہوں نے مالیاتی صنعت کو جدت اور ٹیکنالوجی پر مبنی جدید کریڈٹ اسکورنگ ماڈل کی طرف گامزن کیا جس سے ملک میں ایس ایم ای سیکٹر کو فائدہ پہنچے گا۔ ہم اس اقدام کا اعلان کرتے ہوئے خوشی محسوس کر رہے ہیں، ہمیں پختہ یقین ہے کہ آگے بڑھنے کا راستہ ہمارے ایس ایم ایز کو مستحکم کر رہا ہے اور انہیں بینکنگ سہولیات تک زیادہ سے زیادہ رسائی فراہم کرنے کے قابل ہوگا۔ کریڈٹ رسک تشخیص کے روایتی طریقوں سے آگے بڑھتے ہوئے کریڈٹ کا تشخیصی سکور کارڈ ملک کے اس انتہائی اہم شعبہ تک ہماری رسائی کو بڑھانے کے لئے ایک اہم عمل ہونا چاہئے۔ اس کا حتمی مقصد یہ ہے کہ ڈیجیٹلائزیشن اور تجزیات کی پشت پر کریڈٹ تشخیص کے عمل کو زیادہ موثر اور حسب ضرورت بنایا جائے۔ہارورڈ کینیڈی اسکول کے پروفیسر اور ہارورڈ میں سنٹر برائے بین الاقوامی ترقی کے ڈائریکٹر ڈاکٹر عاصم آئی خواجہ نے کہا کہ DigiServ متبادل کریڈٹ اسکورنگ تکنیک کے ذریعے مالی رسائی کو فعال بناتے ہوئے پاکستان میں چھوٹے کاروباروں کی کاروباری صلاحیتوں کو بڑھانے کی کوشش کر رہا ہے۔ کارنداز اور بینک الفلاح کے ساتھ یہ شراکت داری مالی شعبہ کے لئے ڈیٹا اور ٹیکنالوجی کی جانب سے پیش کردہ امکانات کو ظاہر کرنے اور معاشی و معاشرتی اثرات پیدا کرنے والے حل کے ڈیزائن اور ٹیسٹ میں ہماری مدد کرے گی۔ کار انداز پاکستان ڈیجیٹل ٹیکنالوجی سے فائدہ اٹھاتے ہوئے چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروباروں کی مدد، بینکنگ سے محروم آبادی کے لئے مالی سہولت میں اضافہ، شواہد پر مبنی بصیرت کو رائج کرنے اور مالیاتی شعبہ میں جدتوں کی حوصلہ افزائی کرتی ہے۔ کار انداز پاکستان کو برطانوی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی (ڈی ایف آئی ڈی) اور بل اینڈ ملینڈا گیٹس فاؤنڈیشن (بی ایم جی ایف) کا مالی تعاون حاصل ہے۔

مزید : کامرس