یونیورسٹی آف اوکاڑہ میں منشیات کے نقصانات کے حوالے سے سیمینار کا انعقاد

یونیورسٹی آف اوکاڑہ میں منشیات کے نقصانات کے حوالے سے سیمینار کا انعقاد

  



اوکاڑہ (پ ر)یونیورسٹی آف اوکاڑہ میں منشیات کے نقصانات کے حوالے سے ایک آگہی سیمینار کا انعقاد ہوا جس میں شعبہ باٹنی، سوشیالوجی اور ابلاغیات کے طلباء نے بھرپور شرکت کی۔ سیمینار سے شعبہ ابلاغیات کے سربراہ ڈاکٹر محمد زاہد بلال، شعبہ سوشیالوجی کے فوکل پرسن شہزاد فرید، ڈائریکٹر انوائرمینٹل ہیلتھ اینڈ سیفٹی ڈاکٹر شفیق الرحمن، شعبہ باٹنی کی فوکل پرسن ڈاکٹر نائلہ مختار اور ایڈیشنل رجسٹرار جنرل جمیل عاصم نے خطاب کیا۔ شہزاد فرید نے طلباء کو ڈرگ فری کیمپس کے لیے ذمہ داریوں سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ منشیات کے بڑھتے ہوئے رجحانات کے پیشِ نظرضروری ہے کہ طلباء اس سے آگاہی حاصل کریں تاکہ اس معاشرتی برائی کا تدارک کیا جا سکے۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ڈرگ فری کیمپس کے لیے طلباء اور اساتذہ کو مل کر کام کرنا چاہیے۔ ڈاکٹر شفیق نے کہا کہ اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ ہمارے ہاں نوجوان نسل میں منشیات کا استعمال بڑھتا جا رہا ہے جس کے تدارت کے لیے اوکاڑہ یونیورسٹی میں بھرپور آگہی مہم چلائی جائے گی۔جمیل عاصم کا کہنا تھا کہ منشیات کے استعمال کی وجہ سے لوگ اپنے حقیقی کردار سے غافل ہو رہے ہیں۔ زندگی بے حد قیمتی ہے جس کی قدر کرنی چاہیے۔ نشے کی عادت معاشرے کو بحرانی کیفیت سے دوچار کر رہی ہے۔

ڈاکٹر نائلہ نے طلباء کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ اوکارہ یونیورسٹی میں طلباء کا ایک اسکواڈ بنایا جائے گا جو ایسی سرگرمیوں کی نشاندہی کرے گا۔

مزید : کامرس