بناسپتی کی سرکاری قیمتیں مقرر کرنے کیخلاف گھی ملوں کے حق میں عبوری حکم امتا عی جاری 

  بناسپتی کی سرکاری قیمتیں مقرر کرنے کیخلاف گھی ملوں کے حق میں عبوری حکم ...

  



لاہور (نامہ نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے بناسپتی کی سرکاری قیمتیں مقررکرنے کے خلاف دائردرخواستوں پرگھی ملوں کے حق میں عبوری حکم امتناعی جاری کرتے ہوئے پنجاب حکومت اورمحکمہ انڈسٹریز پنجاب کے ڈائریکٹر جنرل سے 29نومبر تک جواب طلب کرلیاہے۔ مسٹر جسٹس جواد حسن نے یونائٹیڈ انڈسٹریز لمیٹڈ سمیت 10گھی ملوں کی ان درخواستوں پرعبوری حکم جاری کیاہے کہ سرکاری نرخوں پر عمل درآمد کروانے کے لئے گھی ملوں (بقیہ نمبر12صفحہ12پر)

 سے زورزبردستی نہ کی جائے۔عدالت نے رجسٹرارآفس کواسی نوعیت کی تمام درخواستوں کو یکجا کرنے کی ہدایت بھی کی ہے تاکہ آئندہ ان کی مشترکہ سماعت کی جاسکے۔عدالت نے حکم دیاہے کہ آئندہ تاریخ سماعت پر مذکورہ محکمہ کے سینئر افسر جو تمام معاملات سے مکمل آگاہ ہوں،ریکارڈ سمیت عدالت میں پیش ہوں،عدالت نے درخواست گزار ملوں کی بھی ہدایت کی ہے کہ وہ بناسپتی کی طلب ورسد، کی گئی سرمایہ کاری کی رقم،پیکنگ کی کوالٹی،ٹرانسپورٹ چارجز اور دیگر معاملات پرلاگت سے متعلق دستاویزات آئندہ سماعت پر عدالت میں پیش کریں۔درخواست گزاروں کا موقف ہے کہ حکومت نے حکم جاری کیاہے کہ 180روپے فی کلو سے زیادہ قیمت پر بناسپتی فروخت نہ کیا جائے،اس نرخ نامے پر عمل درآمد کے لئے درخواست گزاروں پر دباؤ ڈالا جارہاہے جبکہ یہ قیمت بناسپتی کی لاگت سے مطابقت نہیں رکھتی۔ سرکاری نرخوں پربناسپتی فروخت ہونے سے ملز مالکان کو شدید نقصان ہوگا۔

بناسپتی،حکم

مزید : ملتان صفحہ آخر