چائلڈ ایکٹ میں مزید بہتری کی گنجائش موجود،چیف جسٹس لاہورہائیکورٹ

چائلڈ ایکٹ میں مزید بہتری کی گنجائش موجود،چیف جسٹس لاہورہائیکورٹ

  



لاہور (نامہ نگار خصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس سردار محمد شمیم خان نے کہا ہے کہ پاکستان گزشتہ لمبے عرصہ سے دہشت گردی کے ناسور کا شکار رہا ہے اور اس حوالے سے انسدادِ دہشت گردی عدالتوں کا کردار بہت اہم ہے۔ چائلڈ ایکٹ میں مزید بہتری کی گنجائش موجود ہے، وہ گزشتہ روز پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں چائلڈ جسٹس اور انسداددہشتگردی عدالتوں کے حوالے سے تین روزہ دو مختلف ورکشاپس کے افتتاحی سیشن سے خطاب کررہے تھے،انہوں نے کہا کہ پنجاب جوڈیشل اکیڈمی میں شروع ہونے والی ان دونوں ورکشاپس کے موضوع بہت حساس نوعیت کے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ دیگر عدالتوں کے ججز کو بھی ماڈل کورٹس کے ججز کی تقلید کرنی چاہیے اور مقدمات میں غیر ضروری التواء کی بجائے جلد انصاف کی فراہمی یقینی بنانی چاہیے۔چیف جسٹس نے جوڈیشل افسران کے لئے بہترین تربیت کے مواقع فراہم کرنے پر پنجاب جوڈیشل اکیڈمی کے کردار کو بھی سراہا، قبل ازیں ڈی جی پنجاب جوڈیشل اکیڈمی حبیب اللہ عامر نے دونوں ورکشاپس کے اغراض و مقاصد بیان کئے، اس موقع پر رجسٹرار لاہور ہائیکورٹ عبدالستار، سیشن جج ہیومن ریسورس ساجد علی اعوان اکیڈمی کے انسٹرکٹرز اور افسران بھی موجود تھے۔

چائلڈ ایکٹ

مزید : صفحہ آخر