یوکرائن پر دباؤ ڈالنے کا حکم صدر ٹرمپ نے دیا، سفیر سونڈ لینڈ کی سنسنی خیز شہادت

  یوکرائن پر دباؤ ڈالنے کا حکم صدر ٹرمپ نے دیا، سفیر سونڈ لینڈ کی سنسنی خیز ...

  



واشنگٹن(اظہر زمان، بیوروچیف) یورپی یونین میں امریکی سفیر گورڈن سونڈلینڈ نے کانگریس کمیٹی کے سامنے سنسنی خیز شہادت دیتے ہوئے تسلیم کر لیا کہ انہو ں نے صدر ٹرمپ کے حکم پر یوکرائن پر دباؤ ڈالا تھا۔ سپیکر نینسی پلوسی کی ہدایت پر کانگریس کمیٹیوں نے ان تمام معاملات کی انکوائری شروع کر رکھی ہے جن میں مواخذے کیلئے ضروری ثبوت فراہم ہو سکیں۔ اس انکوائری کا دوسرا ہفتہ زور و شور سے جاری ہے۔ یورپی یونین کے سفیر کی شہادت اب تک کی اہم ترین شہادت ہے جو ایک حاضر سروس ٹرمپ انتظامیہ کے رکن کی طرف سے سامنے آئی ہے جس سے وائٹ ہاؤس میں کھلبلی مچ گئی ہے۔ سفیر سونڈلینڈ نے بتایا انہو ں نے صدر کے ذاتی وکیل اور قریبی ساتھی نیویارک کے سابق میئر روڈولف جولیانی کیساتھ مل کر یوکرائن پر دباؤ ڈالا کہ مخالف صدارتی امیدوار سابق نائب صدر جوبائیڈن اور ان کے بیٹے ہنٹر کیخلاف تحقیقات کرے تاکہ اس کا آئندہ صدارتی انتخابات میں ٹرمپ کو فائدہ پہنچ سکے۔ ان کا کہنا تھا وائٹ ہاؤس کے اعلیٰ حکام صدر ٹرمپ کے اس حکم سے پوری طرح آگاہ تھے۔ ایوان نمائندگان کی انٹیلی جنس کمیٹی کے سامنے شہادت دیتے ہوئے انہوں نے کہا انہوں نے صدر کے حکم پر ہچکچاتے ہوئے عمل کیا جس میں انہوں نے کہا میں ان کے ذاتی وکیل کیساتھ مل کر کام کروں۔ یاد رہے سابق نائب صدر جوبائیڈن ڈیموکر یٹک صدارتی ٹکٹ کے امیدوار ہیں جن کے بیٹے ہنٹر نے یوکرائن میں سرمایہ کاری کر رکھی ہے اور جہاں ان کے بزنس کے بارے میں حکومتی سطح پر پوچھ گچھ جاری ہے۔ صدر ٹرمپ نے ٹیلی فون کے ذریعے یوکرائن کے صدر کو جوبائیڈن کیخلاف تحقیقات کو موثر بنانے کے بدلے میں ان سے فوجی امداد بحال کرنے کا وعدہ کیا تھا۔ یہ ٹیلی فون کال انٹیلی جنس والوں نے سن کر انسپکٹر جنرل کو شکایت درج کرا دی تھی۔ مسٹر سونڈ لینڈ نے اس غیر قانونی کام میں صدر ٹرمپ کیسا تھ نائب صدر، وزیر خارجہ اور وائٹ ہاؤس کے دیگر اعلیٰ حکام کو بھی ملوث کر لیا ہے۔

سونڈ لینڈ شہادت

مزید : صفحہ اول