پنجاب میں صاف پانی فراہمی کا منصوبہ پھر ٹھپ، 19اجلاس بے نتیجہ، کوئی محکمہ بغیر پی سی ون، پلاننگ فنڈز جاری کرنے سے گریزاں 

  پنجاب میں صاف پانی فراہمی کا منصوبہ پھر ٹھپ، 19اجلاس بے نتیجہ، کوئی محکمہ ...

  



لاہور (جنرل رپورٹر) پنجاب میں صاف پانی کی فراہمی کا منصوبہ موجودہ حکومت میں بھی ٹھپ ہوگیا،صوبہ کے عوام کو صاف پانی کی فراہمی کیلئے 19 اجلاس ہو ئے لیکن 8 ارب روپے میں سے ایک روپیہ بھی خرچ نہ ہوا۔ ذرائع کے مطابق کوئی محکمہ بھی بغیر پی سی ون اور پلاننگ کے فنڈز جاری کرنے کے حق میں نہیں، آب پاک اتھارٹی نے فنڈز تو مانگ لئے لیکن پی سی ون تاحال نہ بنا یا جا سکا، گورنر ہاؤس، سی ایم سیکر ٹریٹ، پی اینڈ ڈی، ہاؤسنگ، وزارت خزانہ میں فائل گھومنے لگی۔وزیراعظم عمران خان نے صاف پانی فراہمی کے منصوبے کا ٹاسک چود ھر ی سرور کی خواہش پر انہیں دیا تھا اور پھر گورنر پنجاب چودھری سرور کے کہنے پر آب پاک اتھارٹی بنائی گئی تھی۔ بعد ازاں محکمہ ہاؤسنگ سے فنڈز دینے کیلئے کہا گیا لیکن محکمہ ہاؤسنگ نے محکمہ خزانہ پنجاب، محکمہ ترقیاتی و منصوبہ بندی سے فنڈز جاری کرنے کیلئے کہا تو محکمہ ترقیاتی و منصو بہ بندی نے فنڈز جاری ہونے سے قبل متعدد اعتراضات اٹھا دئیے، تاہم محکمہ ہاؤسنگ کی جانب سے کوئی واضح جواب نہ دیا جا سکا۔ بو رڈ کی جانب سے کہا گیا پی سی ون منظوری کے بعد فنڈز جاری ہونگے۔ اس حوالے سے محکمہ ہاؤسنگ پنجاب کے حکام کہتے ہیں صاف پا نی کی فرا ہمی کیلئے جلد فنڈز جاری کروالئے جائیں گے جبکہ محکمہ خزانہ پنجاب کے حکام کہتے ہیں صوبائی ترقیاتی بورڈ کی منظوری کے بغیر فنڈز جاری نہیں کر سکتے۔

صاف پانی منصوبہ

مزید : صفحہ آخر