بچوں سے بد اخلاقی کیس کی تفتیش اے ایس پی سے کم رینک کا افسر نہیں کرے گا: جسٹس اطہر من اللہ 

بچوں سے بد اخلاقی کیس کی تفتیش اے ایس پی سے کم رینک کا افسر نہیں کرے گا: جسٹس ...

  



اسلام آباد(آن لائن)اسلام آباد ہائی کورٹ نے بچوں سے بد اخلاقی کے بڑھتے واقعات پربڑا فیصلہ سنا دیا،  عدالت نے تحریری فیصلے میں حکم دیا کہ کسی بد اخلاقی کیس کی تفتیش  اے ایس پی سے کم رینک کا افسر نہیں کرے گا،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے تحریری فیصلہ جاری کر دیا،بد اخلاقی کے واقعات کے سدِباب کے لئے عدالت نے خصوصی ہدایات بھی جاری کر دیں، آئی جی اور چیف کمشنر اسلام آباد کو خصوصی لائحہ عمل تیار کرنے کی بھی ہدایت بچوں سے بد اخلاقی کے ملزمان کا میڈیکل بورڈ سے معائنہ کرایا جائے،ضمانت کی درخواست آنے پر ملزم کے کریمنل ریکارڈ کو بھی حصہ بنایا جائے ہر ملزم کے کریمنل ریکارڈ سے تعین کیا جائے کہ ضمانت کی صورت میں دوبارہ جرم کا امکان تو نہیں، یاد رہے کہ بدھ کو عدالت نے ملزم کی درخواست ضمانت بعد از گرفتاری مسترد کردی تھی اس کے ساتھ عدالت نے اسلام آباد پولیس کی سرزنش بھی کی تھی عدالت نے ریمارکس دئیے تھے کہ اسلام آباد پولیس کام نہیں کرتی جب کوئی چیز میڈیا پر آتی ہے تو اس کے بعد اسلام آباد پولیس سرگرم ہوتی ہے۔

 بد اخلاقی کیس

مزید : صفحہ آخر