سپریم کورٹ ،سابق خاتون ایڈیشنل سیشن جج کی پانچویں بار محکمانہ امتحان کا موقع دینے کی درخواست مسترد

سپریم کورٹ ،سابق خاتون ایڈیشنل سیشن جج کی پانچویں بار محکمانہ امتحان کا موقع ...
سپریم کورٹ ،سابق خاتون ایڈیشنل سیشن جج کی پانچویں بار محکمانہ امتحان کا موقع دینے کی درخواست مسترد

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سپریم کورٹ نے سابق خاتون ایڈیشنل سیشن جج کو محکمانہ امتحان کا موقع دینے کی درخواست مسترد کردی،سپریم کورٹ نے سابق جج خاتون کو عدالت میں بات کرنے سے روک دیا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق سپریم کورٹ میں سابق خاتون ایڈیشنل سیشن جج کی محکمانہ امتحان کاموقع دینے سے متعلق درخواست پر سماعت ہوئی،وکیل درخواستگزار نے کہا کہ خاتون کو 2013 میں ایڈیشنل سیشن جج تعینات کیاگیا،لاہورہائیکورٹ کے حکم پر محکمانہ امتحان ہوا،جسٹس گلزاراحمد نے وکیل سے استفسار کیا کہ اس امتحان کا کیا نتیجہ آیا؟وکیل درخواست گزار نے کہا کہ خاتون جج کو خاندانی مسائل کا سامنا رہا،ریحانہ نواز محکمانہ 4 امتحان دینے کے باوجود کامیاب نہ ہو سکیں ،پہلے پرچے میں ریحانہ نواز کسی ایک پرچے میں بھی کامیاب نہیں ہو سکی ،دوسری کوشش میں یہ 4 پرچوں میں فیل اور 3 میں کامیاب ہوئی،تیسری بار دوبارہ یہ تمام پرچوں میں فیل ہو گئی،چوتھی اور آخری بار ریحانہ نواز نے سوائے ایک کے تمام پرچے پاس کرلئے ۔

وکیل نے کہا کہ قانون کے مطابق امتحانات کو دو سال کے اندر ہوناتھا جبکہ یہ 13 ماہ میں لئے گئے،ریحانہ نواز نے چیف جسٹس ہائیکورٹ کو معاملہ خودسننے کی استدعا کی جو مستردہو گئی،وکیل نے مزیدکہاکہ ریحانہ نوازکو ملازمت اختیار کرنے کے 4 سال بعد 2017 میں نوکری سے نکال دیا گیالاہورہائیکورٹٹ نے امتحان کیلئے پانچویں بار موقع دینے کی درخواست خارج کردی۔

جسٹس گلزاراحمد نے استفسار کیا اب آپ ہم سے کیاچاہتے ہیں؟وکیل درخواستگزار نے کہاکہ خاتون جج کو خاندانی مسائل کاسامنا رہا،پہلے امتحان سے ایک روز قبل والدکاانتقال ہوگیا،دوسرے امتحان کے وقت ریحانہ نواز حاملہ تھی،تیسرے امتحان کے وقت ریحانہ نواز کی والدہ بیمار تھیں،چوتھے امتحان سے قبل ریحانہ نواز کے سسر کا انتقال ہو گیا تھا۔

جسٹس گلزاراحمد نے کہا جو چیزیں آپ بتا رہے ہیں یہ ریکارڈپر تو موجود نہیں،ہم آپ کو پانچویں بار موقع کیسے دیدیں؟ہمارے سامنے تو کچھ ہے ہی نہیں،عدالت نے سابق خاتون ایڈیشنل سیشن جج کوپانچویں امتحان کا موقع دینے کی درخواست مستردکردی۔

مزید : قومی /علاقائی /اسلام آباد