آمریت کے تحت جیل کاٹنے والے زرداری آج بھی اسی میراث کے تحت قید ہیں،بختاوربھٹو

آمریت کے تحت جیل کاٹنے والے زرداری آج بھی اسی میراث کے تحت قید ...
آمریت کے تحت جیل کاٹنے والے زرداری آج بھی اسی میراث کے تحت قید ہیں،بختاوربھٹو

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)سابق صدر آصف علی زرداری کی صاحبزادی بختاور بھٹو کہتی ہیں کہ آٹھ سال تک آمریت کے تحت جیل کاٹنے والے آصف زرداری ایک بار پھر اسی آمرانہ میراث کے تحت جیل میں قید ہیں۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ پردیئے گئے بیان میں انہوں نے کہا”آصف علی زرداری فوجی آمریت کے تحت بغیر کسی جرم کے آٹھ سال تک جیل میں قید رہنے کے بعدآج ہی کے دن یعنی 22 نومبر(2004)کو رہاہوئے تھے ۔بائیس نومبر دوہزار انیس کو ایک بار پھر وہ اسی آمرکی میراث کے تحت بغیر کسی ٹرائل کے 166 دن سے جیل میں ہیں۔نہ صرف وہ اپنا ضمانت کا حق نہیں مانگ رہے بلکہ انہوں نے پرائیویٹ ڈاکٹرز تک رسائی سے بھی انکار کردیاہے۔“

یاد رہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب) نے جعلی اکاونٹس کیس میں سابق صدر اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری کورواں سال دس جون کو گرفتارکرکے اڈیالہ جیل منتقل کیاگیاتھا۔

واضح رہے کہ ماضی میں آصف علی زرداری کو پانچ نومبر سن انیس سو چھیانوے کو اس وقت گرفتار کیا گیا تھا جب ان ہی کی جماعت کے منتخب کردہ صدر فاروق احمد خان لغاری نے اسمبلیاں توڑ کر بینظیر بھٹو کی حکومت ختم کردی تھی۔

بی بی سی اردو کے مطابقایک دن عدالت میں صحافیوں نے جب ان سے پوچھا کہ انہوں نے آٹھ سال میں کیا کھویا اور کیا پایا تو انہوں نے کہاتھا کہ’آٹھ سالہ قید میں جوانی تو گئی، لیکن سیاسی تدبر، حالات کو سمجھنے کی صلاحیت، اچھے دوست اور بہت کچھ حاصل بھی کیا ہے۔صحافیوں کے مختلف سوالات کے جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہاتھا کہ آٹھ برس قید کاٹنے پر انہیں افسوس ہے لیکن رہائی کے لیے وہ سمجھوتہ نہیں کریں گے۔

آصف علی زرداری پر قتل اور بدعنوانی کے الزامات کے تحت ڈیڑھ درجن کے قریب مقدمات قائم کیے گئے تھے اور زیادہ تر مقدمات میاں نواز شریف کے دور حکومت میں داخل ہوئے تھے۔

مزید : قومی