پاکستانی نوعمروں کا سستی میں دنیا میں کونسا نمبر ہے؟ فہرست سامنے آگئی

پاکستانی نوعمروں کا سستی میں دنیا میں کونسا نمبر ہے؟ فہرست سامنے آگئی
پاکستانی نوعمروں کا سستی میں دنیا میں کونسا نمبر ہے؟ فہرست سامنے آگئی

  



نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی طرف سے نوجوان نسل کے متحرک ہونے کے حوالے سے دنیا کی درجہ بندی سامنے آ گئی ہے اور آپ کو یہ سن کر افسوس ہو گا کہ پاکستان کو اس فہرست میں سست ترین اقوام میں شمار کیا گیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق اس فہرست میں بنگلہ دیش پہلے نمبر پر آیا ہے جہاں کے نوجوان دنیا میں سب سے زیادہ متحرک ہوتے ہیں۔ بنگلہ دیش میں 66.1فیصد بچے دن میں ایک گھنٹے سے کم متحرک ہوتے ہیں۔ دوسرے نمبر پر سلواکیہ میں یہ شرح 71.5فیصد، تیسرے نمبر پر آئرلینڈ میں 71.8فیصد، چوتھے نمبر پر امریکہ میں 72فیصد، پانچویں نمبر پر بلغاریہ میں 73.3فیصد، چھٹے نمبر پر البانیا میں 73.9فیصد، ساتویں نمبر پر بھارت میں 73.9فیصد، آٹھویں نمبر ر گرین لینڈ میں 73.9فیصد، نویں نمبر پر فن لینڈ میں 75.4فیصد اور دسویں نمبر پر یورپی ملک مالدووا میں 75.7فیصد بچے دن میں ایک گھنٹہ یا اس سے کم متحرک ہوتے ہیں۔

دنیا میں سست ترین بچے جنوبی کوریا میں ہوتے ہیں جہاں 94.2فیصد بچے دن میں ایک گھنٹہ یا اس سے کم متحرک ہوتے ہیں۔ جنوبی کوریا کے بعد بالترتیب فلپائن، کمبوڈیا، سوڈان، تیمر لیسٹ، زیمبیا، آسٹریلیا، وینزویلا، نیوزی لینڈ اور اٹلی کی نوجوان نسل سب سے زیادہ سست پائی گئی۔ پاکستان اس 146ممالک کی فہرست میں 118ویں نمبر پرآتا ہے جہاں 86.9فیصد بچے دن میں بمشکل ایک گھنٹے تک متحرک رہتے ہیں، یعنی پاکستانی نوجوان نسل بھی دنیا کی انتہائی سست ترین نوجوان نسلوں میں سے ایک ہے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ دنیا میں نوجوان نسل کے اس قدر سست ہوجانے کی وجہ مکنہ طور پر موبائل فونز اور انٹرنیٹ ہیں۔

مزید : ڈیلی بائیٹس