عاشق رسول ؐ کو لاکھوں سلا م، علامہ خادم حسین رضوی کی نماز جنازہ مینار پاکستان گراؤنڈ میں ادا، مدرسہ ابوذ رغفاری ؓ میں سپرد خاک

      عاشق رسول ؐ کو لاکھوں سلا م، علامہ خادم حسین رضوی کی نماز جنازہ مینار ...

  

لاہور(نمائندہ خصوصی،کر ائم رپو رٹر، مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں) تحریک لبیک پاکستان کے سربراہ خادم حسین رضوی کی میت کو مینار پاکستان گراؤنڈ میں نماز جنازہ کی ادائیگی کے بعد لا کھو ں سوگواروں کی موجودگی میں ملتان روڈ پر مدرسہ ابوذر غفاری میں سپرد خاک کردیاگیا۔نماز جنازہ مرحوم کے صاحبزادے حافظ سعد حسین رضوی نے پڑھائی اور بعد ازاں اجتماعی دعا کرائی۔نماز جنازہ میں ملک کے کونے کونے کراچی تا پشاور اور کوئٹہ تا آزاد کشمیر سے عاشقان مصطفےٰ ؐکا ٹھاٹھے مارتا ہوا سمندر موجود تھا۔مینار پاکستان،بادشاہی مسجد کے اطرا ف کی سڑکیں اور گول پل پر لاکھوں غلامان مصطفےٰ ؐنے نماز جنازہ ادا کی۔نمازجناز ہ کی ادائیگی کے بعد میت کو تدفین کیلئے ملتان روڈ پر مدرسہ ابوذر غفاری لے جایا گیا جہاں بیٹوں اور قر یبی ساتھیوں نے خادم حسین رضوی کی میت کو لحد میں اتارا۔قبل ازیں میت کو ایمبولینس کے ذریعے سبزہ زار سے مینار پاکستان گراؤنڈ لایاگیا جہاں پہلے ہی تل دھرنے کی جگہ نہیں تھی۔ سبزہ زار سے مینار پاکستان قریباً نو کلومیٹر کا فاصلہ چارگھنٹے میں طے ہوا، سڑک کے دونوں اطراف اور چھتوں پر کھڑے لوگوں نے گاڑی پر پھول برسائے۔ تحریک کے رضا کا ر وں نے ایمبولینس سمیت سکیورٹی کے دیگر انتظامات مثالی انداز میں سنبھال رکھے تھے، جبکہ قانون نافذ کرنیوالے اداروں کے جوان بھی سیکڑوں کی تعداد میں جلوس کیلئے خدمات انجام دیتے رہے، اہل سنت کی جید شخصیات صبح دس بجے سے پہلے ہی نماز جنازہ میں شرکت کیلئے ملک کے کونے کونے سے پہنچ گئیں۔لوگ مینار پاکستان فلائی اوور پربھی چڑھے ہوئے تھے۔ نماز جنازہ کے لئے مینار پاکستان کا سبزہ زار کم پڑ گیا اورلوگوں کو اطراف کی سڑکوں پر نماز جنازہ ادا کرنا پڑی۔لاہور میں سکیورٹی ہائی الرٹ رکھی گئی تھی جبکہ شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر چیکنگ کا عمل سخت کر دیا گیا تھا۔ ایک ہزار سے زائد پولیس افسران و اہلکار تعینات رہے، 03ایس پیز، 14ڈی ایس پیز، 31ایس ایچ اوز، 116اپر سب انسپکٹر ز نے فرائض سر انجام دئیے۔ اس موقع پر رقت آمیز مناظربھی دیکھنے میں آئے، کارکنان اور عقیدتمند دھاڑیں مار مار کر روتے رہے اور شدت غم سے نڈھال نظر آئے۔نما ز جنازہ میں وفاقی وزیر مذہبی امور پیر نورالحق قادری،علامہ خادم حسین رضوی کے استاذ عبدالستار سعیدی،مفتی منیب الرحمن، مولانا الیاس قادری کے فرزند مولانا بلال عطاری قادری، ثروت اعجاز قادری، جماعت اسلامی کے نائب امیرلیاقت بلوچ،ذکر اللہ مجاہد، ناظم اعلیٰ جامعہ نعیمیہ ڈاکٹر راغب حسین نعیمی، ڈاکٹراشرف آصف جلالی، میاں ولید احمد شرقپوری،علامہ شفیق امینی، بشیر احمد یوسفی، صاحبزادہ عثمان علی جلالی، علامہ قاری زوار بہادر، صاحبزادہ فضل الرحمن اوکاڑوی، مولانا فاروق الحسن، علامہ مقصود احمد مکی مدنی، علامہ عبدالمصطفی ہزاروی، خو ا جہ غلام قطب الدین فریدی،صاحبزادہ غلام نصیرالدین چراغ، جمعیت علماء اسلام کے مرکزی رہنما مولانا محمد امجد خان، مولانا رشید میاں، مولانا عبدالو د ود، مولانا سلیم اللہ قادری، حافظ غضنفر عزیز، صاحبزادہ فہیم الدین، محمد افضل خان، قاری حنیف الحق، حافظ عبد الواجد۔ تحریک لبیک یا رسول اللہ کے سربراہ ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی، ڈاکٹر میاں صغیراحمد مجد د ی،علامہ عبد الرشید اویسی،علامہ فرمان علی حیدری،صاحبزادہ مرتضیٰ علی ہاشمی،پیر سید ظفر علی شاہ بنوری،میاں محمد تنویر کوٹلوی،مفتی محمد طاہر نواز طحاوی،مفتی محمد زاہد نعمانی،مفتی ارشاد احمد جلالی،مفتی محمد صمصام مجددی، جامعہ نظامیہ کے شیخ الحدیث علامہ حافظ عبدالستار سعیدی، علامہ قاری محمد زوار بہادر، حافظ نصیر احمد نورانی،رشید احمد رضوی،مفتی تصدق حسین،محمد ایوب مغل،محمد ارشد مہر،حافظ احسان الحق،خواجہ محمد عمران،مفتی غلام رسول،مولاناحاجی شوکت علی،مولانا سید اصغر علی شاہ،مولانا غلام عباس،پروفیسر احمد رضا خان،مفتی انتخاب نور ی، مولانا محمد سلیم اعوان،حاجی شوکت علی،مولانا محمد اعظم قادری،صاحبزادہ رضا مصطفےٰ،مفتی محمد حسیب، پیر منیر قادری،مولانا عبدالر?ف نورانی،مولانا نعیم جاوید نوری،مولانا محمد علی نقشبندی، مفتی عرفان حنفی،حافظ لیاقت علی رضوی،مولانا سرفراز احمد احمدقادری،صاحبزادہ محمد حمادزوار، مولانا شبیر حسین فریدی،قاری اعجاز احمد نورانی،حافظ محمد طارق، جمعیت علماء پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل سید محمد صفدر شاہ گیلانی،علامہ سید عقیل انجم قادری، صاحبزادہ مفتی محمد فضل الرحمن اوکاڑوی، میاں شبیر شرقپوری،پیر سید شاہد حسین گردیزی، ملک محبوب الرسول قادری علامہ نعیم جاوید نوری،مولانا نصیر احمد نورانی پیر سعید احمد نقشبندی،علامہ سید عرفان شاہ مشہدی، پیر میاں محمد حنفی سیفی، علامہ طاہر تبسم قادری، علامہ ٹاقب رضا مصطفائی کے علاوہ دیگر علماء و قائدین،،عقیدت مندوں اور کارکنوں سمیت تمام شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے لاکھوں افراد نے شرکت کی۔تحریک لبیک یا رسول اللہ صلی اللہ علیک وسلم کے سربراہ اور تحریک صراط مستقیم کے بانی ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی نے بھی علماء مشائخ اور کارکنان کی ایک بڑی تعدادکے ساتھ جلوس کے ہمراہ مینار پاکستان گراؤنڈ میں شرکت کی۔نماز جنازہ میں ملک بھر سے علماء و مشائخ سمیت دینی وسیاسی جماعتوں،تاجروں،وکلاء سمیت زندگی کے ہر شعبہ سے تعلق رکھنے والے شریک تھے

جنازہ، تدفین

مزید :

صفحہ اول -