جھوک فرید میں تحفظ صحافیاں کانفرنس جرنلسٹس کے خلاف مقدمات کی شدید  مذمت‘ آئی جی سے تحقیقات کا مطالبہ

 جھوک فرید میں تحفظ صحافیاں کانفرنس جرنلسٹس کے خلاف مقدمات کی شدید  مذمت‘ ...

  

 راجن پور(تحصیل رپورٹر) مظلوم قوتوں کے اتحاد سے جابر قوتوں کو جبر سے روکا جا سکتا ہے ہمارا  قانون مصلحتوں کا شکار ہے لوگوں کو انصاف دلانے والے خود انصاف کیلئے سرگرداں ہیں ان خیالات کا اظہار جھوک فرید (بقیہ نمبر7صفحہ 6پر)

میں تحفظ صحافیان کانفرنس سے مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کیا۔کانفرنس میں رحیم یار خان،ڈیرہ غازی خان اورراجن پور اضلاع کے صحافیوں نے شرکت کی۔کانفرنس کے میز بان خواجہ غلام فرید کوریجہ نے کہا کہ ضلح ڈیرہ غازی خان میں صحافیوں کے خلاف مقدمات ہوئے اور انہیں جیلوں میں ڈالا گیا راجن پور میں ایک صحافی کے خلاف اغوا برائے تاوان،چوری،ڈکیتی اور فراڈ کے تین علیحدہ علیحدہ مقدمے درج کیے گئے صحافی کے خلاف پولیس بارڈر ملٹری پولیس راجن پور میں بھی موٹر سائیکل ڈکیتی کا مقدمہ درج کرایا گیا اگر میڈیا کو انصاف نہیں مل رہا تو عام آدمی کا حال کیا ہو گا اگر سول سوسائٹی نے آواز بلند نہ کی تو اسے بھی کل ان حالات کا سامنا کرنا پڑے گا ڈسٹرکٹ پریس کلب کے صدر شہزاد منظور،سینئر صحافی سید عاشق بخاری،کنور فہیم،پریس کلب مٹھن کوٹ کے صدر سلیم رضا،خرم شہزاد بھٹہ،اسلم شاد و دیگر نے صحافیوں کے خلاف سنگین جرائم کے مقدمات کے اندراج کی شدید مذمت کرتے ہوئے آئی جی پنجاب سے مطالبہ کیا کہ اس کی تحقیقات کیلئے جے آئی ٹی بنائی جائے انہوں نے کہا کہ بارڈر ملٹری پولیس متنازعہ فورس ہے اور کئی عشروں سے اس کے خاتمے کیلئے آواز بلند ہو رہی کئی جگہوں پر اسے ختم کیا جا چکا ہے انہوں نے مطالبہ کیا کہ مقدمات کو فوری ختم کیا جائے سرائیکستان صوبہ محاذ کے زیر 20 تحفظ صحافیان کانفرنس کا انعقاد کیا گیا۔اختتام سے قبل عرس خواجہ فرید پر سے پابندیاں ہٹانے،صحافیوں کے خلاف مقدمات کی واپسی اور صحافیوں کے خلاف مقدمات بارے جے اے ٹی بنانے کی خواجہ غلاف فرید نے قرار دادیں پیش کیں شرکا نے ہاتھ کھڑے کر کے ان کی منظوری دی۔

مطالبہ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -