انتظامیہ کو درخواست دیدی‘ ملتان جلسہ ہر صورت ہوگا‘ یوسف رضا کا اعلان 

      انتظامیہ کو درخواست دیدی‘ ملتان جلسہ ہر صورت ہوگا‘ یوسف رضا کا اعلان 

  

 ملتان ( سٹی رپورٹر)پی ڈی ایم ملتان جلسے کا پہلا اور دوسرا آپشن بھی قلعہ قاسم باغ اسٹیڈیم ہے جبکہ پیپلز پارٹی میزبان کی حیثیت سے اپنا 53 واں یوم تاسیس مناتے ہوئے پی ڈی ایم کا ملتان جلسہ ہر صورت کرے گی اور کرونا ایس او پیز کے تحت شرکاء کو ماسک فراہم کیے جائیں گے اور انٹری گیٹ پر ہینڈ سینیٹائزر کا اہتمام یقینی بنایا جاے گا کیونکہ پاکستان پیپلز پارٹی آئین (بقیہ نمبر2صفحہ 6پر)

و قانون کی ہمیشہ سے علمبردار جماعت ھے اور قانونی تقاضے پورا کرتے ہوئے قلعہ قاسم باغ اسٹیڈیم میں جلسہ کرنے کی درخواست مقامی انتظامیہ کو دی گئی تھی لیکن پیپلز پارٹی پی ڈی ایم جلسے کے لیے حکومتی اجازت کی محتاج ہرگزنہیں جبکہ جلسے کے لیے سیکیورٹی فراہم کرنا اور ٹریفک پلان ترتیب دینا اب حکومتی ذمہ داری ہے کیونکہ یہ ھمارآئینی و جمہوری استحقاق ہے ان خیالات کا اظہاسینیئر وائس چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی و سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی نے ڈویژنل جنرل سیکرٹری و سابق ممبر پنجاب اسمبلی ڈاکٹر جاوید صدیقی کی رھائش گاہ پر صوبائی حلقہ 216 اور اسکی ملحقہ یونین کونسلز کے پارٹی عہدیداران و کارکنان، تاجر، لیبر، کلرکس بار اور سیاسی و سماجی شخصیات کے منعقدہ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا اور کہا کہ موجودہ نااہل و ناکام حکمرانوں کو کوروناکی آڑ میں چھپنے اورہمارے جلسوں کو سبوتاژ کرنے کی اجازت ہرگزنہیں دیں گے جبکہ ملتان مین پیپلز پارٹی کے پچھلے کامیاب جلسے کی طرح اس بار بھی قاسم باغ اسٹیڈیم کو بھرنا ملتان کے غیور شہریوں کی ذمہ داری ہے اور 30 نومبر کو پی ڈی ایم کے ملتان جلسہ کو تاریخی جلسہ بنانے کے لیے پارٹی کارکنان گلی محلوں اور کوچوں میں ہر جگہ پھیل جائیں تاکہ عوامی حقوق کی پاسداری اورآئین  و پارلیمنٹ کی بالا دستی اور موجودہ نااہل اور عوام دشمن حکومت کے خاتمے کے لیے پی ڈی ایم کے ملتان جلسہ کی کامیابی یقینی ہو سکے کیونکہ سنا تھا کہ حکومتیں عوام کے منہ سے نوالہ چھینتی ہیں لیکن موجودہ عوام کش حکومت نے ادویات کی قیمتیں آسمان پر پہنچا کر مریضوں سے جینے کی دوائیاں بھی چھین لی ہیں اس موقع پرسینیئرنائب صدر جنوبی پنجاب خواجہ رضوان عالم، میزبان و سابق ایم پی اے ڈاکٹر جاوید صدیقی، سٹی صدر ملک نسیم لابر، ضلعی جنرل سیکرٹری راؤ ساجد علی، سٹی جنرل سیکرٹری اے ڈی بلوچ، ڈویژنل سیکرٹری انفارمیشن ایم سلیم راجہ، سینیئر نائب صدر سٹی منظور قادری ایڈووکیٹ، سابق ٹکٹ ہولڈر ملک شکیل لابر، سید مصطفی گیلانی، حاجی مشتاق انصاری، میر احمد کامران مگسی، چوھدری یاسین، رئیس الدین قریشی، اللہ بخش بھٹہ، حاجی خلیل راں، مشتاق بلوچ، عاشق بھٹہ، کشمیری ٹکٹ ہولڈر حفیظ بٹ، خواجہ عزیز الرحمان صدیقی، عبدالروف لودھی، حاجی امین ساجد، عاشق بلوچ، ضیا انصاری، بیگم بی اے جگر، راضیہ رفیق، شگفتہ حبیب، سحرش خان، زاھد محمود صدیقی، ہاشم خان بابر، سلیم شہزاد، نوید ھاشمی ایڈووکیٹ، ڈاکٹر عالمگیر قریشی، صدرالدین گیلانی، سلیم طفیل قریشی، طارق شاد، ملک امداد جھولے لعل، سید شوکت گیلانی، شفقت رضا ملک، اشرف بھٹی، ملک افتخار، ادریس بٹ، اطہر نواز، سید فرحان ظفر گیلانی، راشد خان، عالم زیدی، اکمل خان بادوزئی، نذیر یوسف، صدیق انصاری، حسنین خان، شمشاد سیال، تنویر اعوان، خواجہ احمد سعید نے بھی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ خطے کی عوام کو سیکرٹریٹ کا لولی پاپ نہیں مکمل علیحدہ صوبہ چاہیے جس کے لیے جنوبی پنجاب کے عوام 30 نومبر کو پی ڈی ایم کے ملتان جلسہ میں بھرپور شرکت کرکے صوبائی سیکرٹریٹ کے خلاف عدم اعتماد کا اظہار کریں گے کنونشن میں ملک فیاض،ارشاد کھنڈ، اعظم انصاری، صغیر بھٹہ، غلام دستگیر، مرزا شاھد، مظہر خورشید صدیقی، خواجہ نادر صدیقی، یعقوب راجپوت، خواجہ ارشد، رمضان کمبوہ، مفتی جمیل، خضر قریشی، ملک فیاض کمبوہ، زاھد بپی، خالد تھہیم، نسیم انصاری، عمر حفیظ خان ملیزیی، احسن بھٹہ، اللہ رکھا، بشیر میتلا، نعیم جھنڈیر، خلیل جھنڈیر، چراغ شاہ، حنان لودھی، بابر شکور صدیقی، زبیر اعوان، شفیق سعیدی، حاجی طاہر، اقبال ھانس، لطیف سیال، منصب بیگم، حفیظاں بی بی، عظمت غنی، وقار انصاری، محسن بھٹی، کاشان مجید، علی تھہیم، اشفاق کھوکھر، زاھد سیال، طلال صدیقی، محمد اکرم، حبیب عباسی، منور منا، حسن محمود، قسور حیدری سمیت سینکڑون کارکنوں کی تعداد شریک تھی۔ ادھر سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی نے کہا ہے کہ ملکی معیشت کے عدم استحکام کی وجہ سے فلم انڈسٹری بھی تباہ حالی کا شکار ہو کر رہ گئی ہے حالانکہ پیپلز پارٹی کے دور حکومت میں جہاں ملکی معیشت مستحکم تھی وہاں عام آدمی کے ساتھ ساتھ فلم انڈ سٹری سے وابستہ اداکاروں اور دیگر عملہ بھی خوشحال رہا عوام نے آنے والے وقتوں میں پیپلز پارٹی کو موقع دیاتو ملکی معیشت کے ساتھ ساتھ فلم انڈسٹری کو مستحکم کرنے کے لئے اقدامات کریں گے ان خیالات کا اظہار انہوں نے  اپنی رہائش گاہ گیلانی ہاوس پر ملک کے معروف پاکستان فلم انڈسٹری کے اداکار معمر رانا اروان کی اہلیہ سے کی گئی ملاقات میں کیا سید یوسف رضا گیلانی نے معمررانا کو اپنی کتاب چاہ یوسف صدا بھی دی اس موقع پر سابق ایم این اے سید علی موسیٰ گیلانی موجود تھے سید یوسف رضا گیلانی نے مزید کہا کہ بڑھتی ہوئی مہنگائی اور بے روزگاری نے تمام شعبہ ہائے کو بے حد متاثر کیا ہے۔ سابق وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی کے صاحبزادے سید علی حیدر گیلانی نے گزشتہ روز جھوک سرائیکستان میں چیئرمین سرائیکستان ڈیموکریٹک پارٹی رانا محمد فراز نون سے پی ڈی ایم جلسہ میں شرکت کی دعوت دینے کے حوالے سے ملاقات کی۔ اس موقع پر ڈاکٹر ظفر ہانس، عامر علی بُچہ، کامران بلوچ و دیگر موجود تھے۔ ملاقات کے دوران حیدر گیلانی نے رانا محمد فراز نون کو پی ڈی ایم جلسہ میں شمولیت کے حوالے سے تفصیلی بات چیت میں کہا کہ وسیب کی پسماندگی اور تمام مسائل کا واحد حل صوبے کا قیام ہے۔ سرائیکی جماعتوں کی نمائندگی ضروری ہے اور سرائیکستان ڈیموکریٹک پارٹی رجسٹرڈ سرائیکی جماعت ہونے کیساتھ ساتھ خطے کی سب سے بڑی سرائیکی جماعت ہے اس کا پی ڈی ایم جلسے میں شریک ہو کر کروڑوں سرائیکیوں کی نمائندگی کرنا ضروری ہے۔ چیئرمین سرائیکستان ڈیموکریٹک پارٹی رانا محمد فراز نون نے علی حیدر گیلانی کو ہم جھوک سرائیکستان آمد پر آپ کا خیر مقدم کرتے ہیں لیکن پی ٹی ایم جلسے میں شرکت بارے ہم ایس ڈی پی سپریم کونسل سے مشاورت کے بعد حتمی اعلان اور فیصلہ کریں گے۔ رانا محمد فرا زنون نے کہا کہ ہم واضح کر دیں کہ ہمارا پچھلی کئی دہائیوں سے مطالبہ الگ صوبہ سرائیکستان کا ہے نہ کہ سیکرٹریٹ کا اور دوسری بات یہ کہ ہم اپنی قوم، اپنے خطے کی شناخت کو مسخ نہیں ہونے دیں گے۔ لفظ جنوبی پنجاب ہمارے خطے، ہماری قوم کی شناخت کو مسخ کرنے کے مترادف ہے۔ ہمارا خطہ سرائیکی وسیب، ہمارا مطالبہ الگ صوبہ سرائیکستان ہے اور ہم صوبہ سرائیکستان بنوا کر دم لیں گے۔ حیدر علی گیلانی نے کہا کہ پیپلزپارٹی سرائیکی وسیب اور یہاں کی عوام کو محرومیوں سے نکالنا چاہتی ہے۔ سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی نے اسمبلی میں سرائیکی صوبے کی آواز اٹھائی صوبہ بھی پیپلز پارٹی ہی بنائے گی۔ پی ڈی ایم کا اصل مقصد صاف شفاف الیکشن ہے۔ علاوہ ازیں جب ہم کہتے تھے کہ کورونا ہے تو حکومت کہتی تھی کہ عام فلو ہے لیکن آج یہ ہمیں کہتے ہیں کہ کورونا ہے جلسہ کی اجازت نہیں دینگے یہ ہمیں نہیں روک سکتے پشاور کا جلسہ بھی ہوگا اور 30 نومبر کو ملتان مین بھی جلسہ ہوگا اور گرفتاریاں، مقدمات غیر جمہوری و غیر آئینن حربے استعمال کرنا حکومت بند کرے  ان خیالات کا اظہار سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی نے پی وائی او ملتان ڈویڑن کے صدر ملک ندیم اختر کی میزبانی میں اور صوبائی صدر پی وائی او سید عارف شاہ کی صدارت میں ہونے والے ملتان ڈویڑن کے یوتھ کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے مزید کہا کہ نوجوان پی ڈی ایم کا ساتھ دیں ہم قانون کی بالادستی، آئین کا بالادستی اور معاشی حالات کو بہتر کرنا چاہتے ہیں آج ملک ملک میں مہنگائی عروج پر ہے لوگ مہنگائی کی چکی میں پس رہے ہیں دو وقت کا کھانا غریب کو میسر نہیں ہم نے مہنگائی و بے روزگاری کے خلاف پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے عوام کے حقوق کیلئے آواز بلند کی ہے مزید کہا کہ موجودہ حکمران کہتے تھے کہ ایک کروڑ نوکریاں دیں گے لیکن 27 لاکھ لوگ بے روزگار کر دئے کہتے تھے کہ چھت دین گے 50 لاکھ گھر دیں گے لیکن لاکھوں سے چھت چھین لی کہتے تھے کہ گندم، چینی، کپاس، چاول سستے کریں گے لیکن دال بھی سستی نہیں وہ بھی غریب کی پہنچ سے باہر ہے ہم اقتدار میں چور دروازہ سے نہیں آنا چاہتے عوام کی طاقت سے آئیں گے۔

اعلان

مزید :

ملتان صفحہ آخر -