کورونا،ڈینگی اور ملیریا بخار سے بچنے والے بدقسمت شخص کو کوبرا سانپ نے ڈس لیا ،اب اس کی حالت کیسی ہے؟جان کرآپ کو بھی افسوس ہو گا

کورونا،ڈینگی اور ملیریا بخار سے بچنے والے بدقسمت شخص کو کوبرا سانپ نے ڈس ...
کورونا،ڈینگی اور ملیریا بخار سے بچنے والے بدقسمت شخص کو کوبرا سانپ نے ڈس لیا ،اب اس کی حالت کیسی ہے؟جان کرآپ کو بھی افسوس ہو گا

  

 نئی دہلی (ڈیلی پاکستان آن لائن)بھارت میں کووڈ 19،ملیریااور ڈینگی  کا سامنا کرنے والے برطانوی فلاحی ادارے کے رکن کو خطرناک   کوبرا سانپ نے ڈس لیا جس کے بعد متاثرہ شخص مفلوج اور نابینا ہوگیا۔

بھارتی اخبار"انڈیا ٹوڈے"کے مطابق  برطانوی فلای ادارے سے تعلق رکھنے والا آئن جونز نامی شخص کو بھارتی ریاست راجھستان کے ضلع جودھ پور میں ایک خطرناک سانپ نے کاٹ لیا جس کے بعد اسے آنکھوں میں دھندلا پن اور چلنے میں شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑا ،آئن جونز کو فوری طور پر جے پور سے 220 کلو میل دور ہسپتال میں داخل کرا دیا ۔ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ سانپ کے کاٹنے سے پہلے آئن جونز کورونا ،ڈینگی اور ملیریا کا شکار تھا اور اسے جس وقت ہسپتال لایا گیا اس وقت بھی ڈاکٹرز نے یہی سمجھا کہ اسے کورونا ہے تاہم ٹیسٹ کرنے پر اس کی رپورٹ منفی آئی تاہم متاثرہ شخص ڈینگی اور ملیریا کا شکار تھا اور ابھی کورونا سے صحت یاب ہو رہا تھا کہ زہریلے سانپ نے اسے کاٹ لیا جس کی وجہ سے اس کی بینائی اور چلنے میں شدید دشواری کا سامنا ہے۔ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ آئن جونز کی بینائی اور چلنے میں دشواری زہریلے سانپ کے کاٹنے کی وجہ سے ہوئی  تاہم یہ بیماری عارضی ہے اور جلد ہی مریض ٹھیک ہو جائے گا ۔

آئن جونز   بھارت کے شمال مغربی حصے کے ایک گاؤں میں کام کررہا تھا، جب ایک زہریلے کنگ کوبرا نے اسے ڈس لیا۔اس شخص کے لیے ساتھیوں اور خاندان کی جانب سے فنڈز اکٹھا کرنے کے لیے بنائے گئے گو فنڈ می پیج کے مطابق برطانیہ کے علاقے آئل آف ویٹ سے تعلق رکھنے والے آئن جونز بھارت میں ایک فلاحی ادارے کے لیے کام کررہے تھے، جس کا مقصد غربت کے شکار ہنرمندوں کی معاونت کرنا ہے۔گو فنڈ می پیج پر جاری بیان کے مطابق سانپ کے ڈسنے کے وقت آئن دوسری بار کووڈ 19 کا سامنا کررہے تھے، جس کا وہ مارچ میں بھی شکار ہوچکے تھے، سانپ کے ڈسنے کے ساتھ معاملہ پہلے سے بھی زیادہ پیچیدہ ہوگیا۔بیان میں بتایا گیا کہ سفری پابندیوں کے باعث وہ گھر واپس نہیں آسکتے تھے اور اب انہیں بڑھتے طبی اخراجات کا سامنا ہے اور اسی لیے یہ پیج بنایا گیا ہے تاکہ فنڈز اکٹھا کرکے اخراجات کی ادائیگی کی جاسکے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -