تفتیشی پولیس افسر سے تعلقات کی بنا  پر خاتون کا تھانے میں جاکر خواتین کو الٹا لٹا کر تشدد، ویڈ یو بھی  سامنے آگئی

تفتیشی پولیس افسر سے تعلقات کی بنا  پر خاتون کا تھانے میں جاکر خواتین کو الٹا ...
تفتیشی پولیس افسر سے تعلقات کی بنا  پر خاتون کا تھانے میں جاکر خواتین کو الٹا لٹا کر تشدد، ویڈ یو بھی  سامنے آگئی

  

قصور(ڈیلی پاکستان آن لائن)تفتیشی پولیس افسر سے تعلقات کی بنا  پر خاتون نے تھانے میں جاکر خواتین کو الٹا لٹا کر تشدد کا نشانہ بناڈالا۔

ویڈیو میں خاتون کو دونوں خواتین کو الٹا لٹا کر جوتے مارتے ہوئے دیکھا جاسکتا ہے۔واقعہ کی فوٹیج سامنے آنے پر پولیس نے ملزمہ کو گرفتار کرلیا ہے۔ قصور پولیس کے مطابق ویڈیو دو دن پرانی ہے۔ساجدہ نامی خاتون نے تفتیشی کے ساتھ تعلقات کی بنا پر خاتون تک رسائی حاصل کی۔ تفتیشی انسپکٹر حیدر کی عدم موجودگی میں ساجدہ نامی خاتون نے ڈکیتی کی ملزمہ پر منصوبہ بندی سے تشدد کیا۔  ساجدہ نے موقع پر موجود لیڈی کانسٹیبل کو اپنا موبائل دیکر ویڈیو بنوائی۔ ڈی پی او صہیب اشرف نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ساجدہ اور لیڈی کانسٹیبل کے خلاف مقدمہ درج کروادیا ہے۔ مقدمہ کے بعد ساجدہ کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ انسپکڑ حیدر علی و لیڈی کانسٹیبل کو معطل کر کے محکمانہ کارروائی کے ساتھ مقدمہ بھی درج کیا گیا ہے۔ ڈی پی او قصور صہیب اشرف کاکہنا ہے کہ  تھانوں میں ایسے گھناونے اقدامات کا خاتمہ کیا جائےگا۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -پنجاب -قصور -