ڈنمارک کا پاکستان کے ساتھ نئے دفاعی پروگرام کا آغاز

ڈنمارک کا پاکستان کے ساتھ نئے دفاعی پروگرام کا آغاز
ڈنمارک کا پاکستان کے ساتھ نئے دفاعی پروگرام کا آغاز

  



اسلام آباد (ویب ڈسک) ڈنمارک حکومت نے پاکستان کے ساتھ نئے دفاعی تعاون کے پروگرام کا آغاز کیا ہے جس کا اجرا ڈنمارک کے دفاع کے وائس چیف لیفٹیننٹ جنرل پرلڈوکسن نے ڈینس رائل ڈیفنس کالج کے وفد کے ہمراہ کیا جو پاکستان کے دورہ پر ہے۔ اجرا کی تقریب میں اعلیٰ حکومتی و فوجی حکام، سفارتکاروں سمیت سینئر دفاعی تجزیہ کاروں نے شرکت کی۔ وائس چیف لیفٹیننٹ جنرل پرولڈوکسن نے خطاب کرتے ہوئے کہا ملٹری اداروں کی پروگرام میں شمولیت سے انتہا پسندی اور عسکریت پسندی کے خلاف جنگ میں مدد ملے گی، پروگرام میں دھماکہ خیز مواد کے تدراک کے لئے پاکستان کے سول و ملٹری اداروں کی صلاحیت میں اضاف کرنا، بارڈر کنٹرول مینجمنٹ سسٹم، سمگلنگ اور عسکریت پسندوں کی نقل و حمل روکنا شامل ہے، پروگرام شہریوں کو سستے انصاف کی فراہمی کے لئے پولیس، پراسیکیوٹرز اور عدلیہ کی تکنیکی صلاحیتوں اور قانون سازی میں معاونت بھی کرے گا، پاکستان کی سلامتی اور استحکام کو درپیش سمندری خطرات، منشیات کی سمگلنگ اور سمندری آلودگی کے خاتمے کے لئے دونوں ممالک تعاون کریں گے، انسداد منشیات، ماحولیات تحفظ اور ریسکیو آپریشن کیلئے تربیت بھی شامل ہے، ڈینش سفارتخانے کی ناظم الامور نیلی ہیلسن نے کہا پاکستان اور افغانستان کے لوگ دہشت گردی سے کسی بھی ملک سے زیادہ متاثر ہیں، امن اور خوشحالی کے لئے کوئی چیز زیادہ اہم نہیں اس لئے باہمی تعاون اور اعتماد کے ذریعے جرائم اور انسداد دہشت گردی کے لئے ایک دوسرے سے تعاون اور تجربات سے فائدہ اٹھانا چاہتے ہیں۔

مزید : اسلام آباد