بھارتی دھاگے اور کپڑے پر اضافی ریگولیٹری ڈیوٹی ، ٹیکسٹائل انڈسڑی کو تباہی بچالیا گیا

بھارتی دھاگے اور کپڑے پر اضافی ریگولیٹری ڈیوٹی ، ٹیکسٹائل انڈسڑی کو تباہی ...

  



 فیصل آباد(آن لائن) آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن (اپٹما) کے صدر طارق مسعود نے کہا ہے کہ حکومت نے بھارتی دھاگے اور کپڑے پر دس فیصد اضافی ریگولیٹری ڈیوٹی لگا کر ٹیکسٹائل انڈسٹری کو مزید تباہ ہونے سے بچا لیا ہے ۔ انہوں نے آن لائن کو بتایا کہ بھارت اور دیگر ممالک پاکستان کی ٹیکسٹائل انڈسٹری کو تباہ کرنے پر تلے ہوئے ہیں جبکہ بھارتی حکومت پاکستان میں اپنی ایجنسی را کے ذریعے ملک میں نہ صرف افراتفری پھیلا رہے ہیں بلکہ بھارت میں مسلمانوں کے ساتھ جو سلوک کیا جارہا ہے وہ دنیا کے ممالک کی آنکھیں کھولنے کیلئے کافی ہیں انہوں نے کہا کہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار اور حکومت نے ٹیکسٹائل انڈسٹری کے مطالبے کو تسلیم کرتے ہوئے جو بھارتی دھاگے پر اضافی ریگولیٹری ڈیوٹی لگائی ہے اس سے ٹیکسٹائل انڈسٹری کو کافی فائدہ پہنچے گا ۔ انہوں نے کہا کہ بعض صنتعکار حکومت کے اس فیصلے کیخلاف جو واویلا مچا رہے ہیں وہ نہ صرف غلط ہے بلکہ بھارت کی صنعت کو مضبوط کرنے کے مترادف ہے ایسے لوگوں کو ہوش کے ناخن لینے چاہیے ۔ چیئرمین اپٹما نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ بجلی اور گیس کے بلوں پر سرچارج ختم کیاجائے اور بینکوں کے کھاتہ داروں پر جو حال ہی میں ڈیوٹی عائد کی ہے اس پر بھی نظر ثانی کی جائے تاکہ ملک میں ایکسپورٹ کا کاروبار دوبارہ بڑھ سکے.

مزید : کامرس