زاہد رسول کا قتل جمہوریت کے نام پر بدترین فسطائیت ہے‘حریت رہنماء

زاہد رسول کا قتل جمہوریت کے نام پر بدترین فسطائیت ہے‘حریت رہنماء

  



سرینگر (اے پی پی) مقبوضہ کشمیرمیں بزرگ حریت رہنماء سید علی گیلانی نے ہندو فرقہ پرستوں کے ہاتھوں کشمیری ٹرک ڈرائیورزاہد رسول کے قتل اور شوکت احمد کو شدید زخمی کرنے کے خلاف کل (جمعہ کو ) پورے جموں وکشمیر میں پر امن احتجاج کرنے کی اپیل کی ہے ۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق سید علی گیلانی نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں کہاکہ جمعرات کو اسلام آباد میں زاہد رسول کی مغفرت کیلئے تعزیتی مجلس منعقد کی جائیگی۔ انہوں نے جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے چیئرمین محمد یاسین ملک پر بھارتی فوج کی سینٹرل ریزروپولیس فورس کی طرف سے قاتلانہ حملہ اورانکی گرفتاری اورحریت رہنماؤں شبیر احمد شاہ، نعیم احمد خان، الطاف احمد شاہ اور ایاز اکبر کو نظربند کرنے اور راجہ معراج الدین کے گھر پر چھاپے کی بھی مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ بھارت میں فرقہ پرست بی جے پی کی حکومت اور مقبوضہ کشمیر کی کٹھ پتلی کی انسان دشمن پالیسی ایک کھلی کتاب ہے اور زاہد رسول کا قتل بھی فرقہ پرست اور جنونی ہندوؤں کی کارستانی ہے۔ انہوں نے کہا کہ زاہد رسول کی ہلاکت اور شوکت احمد کا صفدر جنگ اسپتال میں موت وحیات کی کشمکش میں مبتلا ہونا جموں و کشمیر کے مسلمانوں کے لیے ایک بڑا المیہ ہے اور اس ظلم وجبر اور بربریت کے خلاف بھرپور احتجاج کیاجاناچاہیے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت کی مجرمانہ غفلت اور بی جے پی کے ایجنڈے پر عمل پیرا کٹھ پتلی انتظامیہ پر بھی زاہد کے قتل کی ذمہ داری عائد ہوتی ہے کیونکہ انہوں نے قاتلوں کے خلاف بروقت اور موثر کارروائی نہیں کی اور اب عوامی دباؤ کے بعد ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔سید علی گیلانی نے کہا کہ قاتلوں کے خلاف دفعہ302کے تحت مقدمہ چلاکر مختصر وقت میں انسانیت کے ان دشمنوں کو عبرتناک سزا دی جانی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ بھارتی حکومت جو اس وقت بھرپور انداز میں کھلے عام انسانیت دشمنی اور اقلیت کے ساتھ نفرت آمیز سلوک ، حیلے بہانوں کے ذریعے بے گناہوں کو قتل کررہی ہے جو جمہوریت کے نام پر بدترین فسطائیت ہے۔

انہوں نے کہاکہ اس فسطائیت کے خلاف خاموش نہیں بیٹھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ فرقہ پرست طاقتوں کے ظلم وجبر، تشدد اور سفاکیت کے خلاف جمعۃ المبارک کو جموں و کشمیر کے تمام خطوں میں منظم، پْرامن اور باوقار احتجاج کیاجائیگا ۔بزرگ رہنما نے کہاکہ ہمارا احتجاج پر امن ہو گااور ہم کسی فرقے کے خلاف یا ان کی املاک کو نقصان نہیں پہنچائیں گے۔انہوں نے کہا کہ جمعہ کو نہ صرف وادی کشمیر، بلکہ پیر پنچال، چناب ویلی اور جموں خطے کے تمام مسلمان اور انسانیت کے دوست اس ظلم وبربریت، قتل اور سفاکیت کے خلاف پْرامن احتجاج کریں۔

مزید : عالمی منظر