نایاب جانوروں کی بقاء کے لئے ضروری ہے کہ ان سے محبت کی جائے،مجاہد کامران

نایاب جانوروں کی بقاء کے لئے ضروری ہے کہ ان سے محبت کی جائے،مجاہد کامران

  



لاہور( خبرنگار) وائس چانسلر پنجاب یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر مجاہد کامران نے کہا ہے نایاب جانوروں کی بقاء کے لئے ضروری ہے کہ ان سے محبت کی جائے کیونکہ جانوراور پرندوں کے رویوں کا انحصار انسانی رویوں پر ہوتا ہے۔ وہ پنجاب یونیورسٹی شعبہ زوالوجی کے زیر اہتمام لاہور چڑیا گھر میں چیتے کے تین ماہ کے بچے کو اپنانے اور نام رکھنے کی تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پرڈائریکٹر جنرل وائلڈ لائف اینڈ پارکس خالد ایاز خان، ڈائریکٹر لاہور چڑیا گھر شفقت علی، اقامتی آفیسر اول پروفیسر ڈاکٹر ساجد رشید، چئیرمین شعبہ زوالوجی پروفیسر ڈاکٹر جاوید اقبال قاضی، پروفیسر ڈاکٹر محمد اختر، ڈاکٹر ذوالفقار علی، فیکلٹی ممبران اور طلبہ کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔ میڈیا سے بات کرتے ہوئے ڈاکٹر مجاہد کامران نے کہاکہ للہ تعالیٰ نے پاکستان کو معدنی وسائل کے ساتھ ساتھ چرند پرند اور حیوانات کی منفرد اقسام سے نواز رکھا ہے جن کی نگہبانی ہمارا فرض ہے۔

انہوں نے کہا کہ جانوروں کو سب سے زیادہ خطرہ انسانوں سے ہی ہے کیونکہ دنیا میں بڑھتی ہوئی انسانی آبادی کے باعث کئی نایاب اقسام کے جانور ناپید ہو چکے ہیں۔

۔انہوں نے کہا کہ جانوروں کی بقاء اور تحفظ کے لئے پنجاب یونیورسٹی ماضی میں بھی کردار ادا کرتی رہی ہے اور آئندہ بھی یہ سلسلہ جاری رکھنے کا عزم رکھتی ہے۔

ڈائریکٹر جنرل وائلڈ لائف اینڈ پارکس خالد ایاز خان نے کہا کہ زمین پر جانوروں کے تحفظ کے لئے پنجاب یونیورسٹی کا اقدام قابل تحسین ہے اس سے دوسروں میں بھی جانوروں کی سرپرستی کیلئے لئے جذبہ بیدار ہوگا۔ ڈائریکٹر لاہور چڑیا گھرشفقت علی نے کہا کہ جانوروں کو نام دینے اور اپنانے سے ان سے محبت کا اظہار ہوتا ہے۔ بعد ازاں وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر مجاہد کامران نے اپنائے گئے چیتے کے بچے ’’روزی ‘‘ کی پرورش کے لئے دو لاکھ روپے کا چیک پیش کیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...