عدالت نے3 کمسن بچیوں کو والدین کے حوالے کردیا

عدالت نے3 کمسن بچیوں کو والدین کے حوالے کردیا

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر)کراچی کی مقامی عدالت نے سکھر سے بازیاب ہونے والی 3 کمسن بچیوں کو والدین کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی ہے۔عدالت نے تینوں بچیوں کو بھی قلمبند کرلیا۔بدھ کو عزیز آباد پولیس نے سکھر سے بازیاب ہونے والی کراچی کی رہائشی 14 سالہ صورت ، 10 سالہ نگینہ اور 7 سالہ ثمینہ کو جوڈیشل مجسٹریٹ وسطی کی عدالت میں پیش کیا ۔عدالت میں تینوں بچیوں کا زیر دفعہ 164 کے تحت بیان بھی قلمبند کر لیا گیا۔ بچیوں نے عدالت میں بیان دیا ہے کہ 7 ستمبر 2015 کو وہ اپنے گھر بھنگوریہ گوٹھ سے پانی بھرنے نکلی تھیں جہاں ملزم صدام حسین نے نشہ آور مشروب پلا کر بیہوش کردیا تھا۔آنکھ کھلی تو خود کو جنگل میں پایا۔ 14 سالہ صورت سے ملزم سلیم جتوئی اور 10 سالہ نگینہ سے اما م بخش جتوئی نے زبردستی نکاح کیا ، بچیوں نے عدالت کو بتایا کہ وہ اپنے والدین کے ساتھ جانا چاہتی ہیں،، عدالت نے بیان قلمبند کرنے کے بعد بچیوں کو والدین کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی ۔ مقدمہ میں 4ملزمان، سلیم جتوئی، امام بخش جتوئی، ہدایت اللہ جتوئی اور شیر دل شامل ہیں ۔ عدالت نے مقدمے میں گرفتار 2 ملزمان صدام حسین اور نیاز علی کو 26 اکتوبر تک عدالت میں پیش ہونے کا حکم بھی دی ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...