لا پتہ افراد بارے اعلیٰ افسروں کی طلبی کا مقصد احکامات پر عملدار آمد کرانا ہے ،چیف جسٹس

لا پتہ افراد بارے اعلیٰ افسروں کی طلبی کا مقصد احکامات پر عملدار آمد کرانا ...

  



 پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس مظہرعالم میانخیل نے کہا ہے کہ لاپتہ افراد بارے درخواستوں کی سماعت کے دوران اعلی افسروں کی طلبی کامقصد عدالتی احکامات پرعملدرآمد کراناہے ہمیں معلوم ہے کہ ان افسروں کے بہت سے اہم معاملات کے اجلاسوں میں بھی شرکت کرناہوتی ہے تاہم جب عدالتی احکامات پر عمل نہیں ہوگا تو ہمیں مجبورا متعلقہ افسرسے جواب دہی کرناہوگی فاضل چیف جسٹس نے یہ ریمارکس گذشتہ روز لاپتہ افراد کی درخواستوں کی سماعت کے دوران دئیے دورکنی بنچ چیف جسٹس مظہرعالم میانخیل اور جسٹس یونس تہیم پرمشتمل تھا فاضل بنچ نے کیس کی کارروائی شروع کی تو اس دوران وفاقی سیکرٹری داخلہ شاہد خان ٗ ہوم سیکرٹری خیبرپختونخوا ارباب محمد عارف ٗ ڈپٹی اٹارنی جنرل مسرت اللہ ٗ ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل قیصرعلی شاہ ٗ جیک برانچ کے کرنل فلک ناز ٗ میجرمحمدعلی عدالت میں پیش ہوئے اس موقع پر وفاقی سیکرٹری نے عدالت کو بتایا کہ عدالت نے انہیں جس کیس میں طلب کیاہے اس میں انہیں نوٹس جاری نہیں ہواتھا کیونکہ اس کیس میں وزارت داخلہ فریق ہی نہیں تھاجندول نامی کیس میں متعلقہ افسروں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اس سلسلے میں معلومات حاصل کریں اورعدالتی حکم پرعملدرآمد کویقینی بنایاجائے جس پر عدالت نے داخلہ اوردفاع کے سیکرٹریوں کو آئندہ پیشیوں پر استثنی دیتے ہوئے ان کی تنخواہیں بھی ریلیز کرنے کاحکم دیا اسی طرح دیگر کیسوں میں وفاقی وزارت داخلہ ٗ دفاع اورسیکرٹری ہوم سے جواب بھی طلب کیاگیا جبکہ فاضل چیف جسٹس نے اس موقع پر ریمارکس دئیے کہ عدالت کے علم میں یہ بات آئی ہے کہ کئی سالوں سے انٹرنی بلیک ڈیکلیئرہونے کے باوجود انٹرمنٹ سینٹروں میں پڑے ہیں اورانہیں متعلقہ عدالتوں میں پیش نہیں کیاجارہا ہے لہذااگلی سماعت سے قبل وفاقی اورصوبائی حکومتیں عدالتی احکامات پر عملدرآمد کویقینی بنائیں اور جن افراد کو انٹرمنٹ سینٹروں میں قانونی عمل مکمل ہونے کے بعد رکھاگیاہے ان کے مقدمات متعلقہ عدالتوں کو فوری طورپربھجوانے کے انتظامات کئے جائیں فاضل بنچ نے اس موقع پر یہ بھی حکم دیا کہ انٹرمنٹ سینٹروں میں موجود افراد کو مروجہ قانون کے مطابق تمام سہولیات فراہم کی جائیں جن میں ان کی صحت اورقریبی عزیزوں سے ملاقات کی سہولیات بھی شامل ہیں بعدازاں درخواستوں کی سماعت آئندہ پیشی تک ملتوی کردی گئی ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...