نشتر آؤٹ ڈور وارڈز کی کمپیوٹرائزیشن کا کام شروع، ایک ماہ کا ٹارگٹ

نشتر آؤٹ ڈور وارڈز کی کمپیوٹرائزیشن کا کام شروع، ایک ماہ کا ٹارگٹ

  



ملتان (جنرل رپورٹر) نشتر ہسپتال کے آؤٹ ڈور وارڈز کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کیلئے گذشتہ روز سے اقدامات شروع کر دیئے گئے ہیں۔ اور اس ضمن میں نشتر انتظامیہ نے وارڈ نمبر 9کے پروفیسر ڈاکٹر افتخار کو انچارج مقرر کیا ہے۔ جو اپنی نگرانی میں ایک ماہ کے اندر اندر تمام تر کام مکمل کروائیں گے واضح رہے کہ (بقیہ نمبر45صفحہ12پر )

ایمرجنسی وارڈ کی طرح تمام آؤٹ ڈور وارڈز میں بھی اب مریضوں کی کمپیوٹرائزڈ سلپ نکلے گی اور ہاتھ سے پرچی بنانے والا کام ختم ہو جائے گا۔ دور دراز سے آنے والے مریضوں کی سہولت کو مدنظر رکھتے ہوئے الٹرا ساؤنڈ اور ایکسرے کی سہولت بھی آؤٹ ڈور وارڈ میں ہی فراہم کی جائے گی اور سنٹرل لیب کا ایک کاؤنٹر آؤٹ ڈور میں بنایا جائے گا۔ تاکہ وہ مریض جن کے تشخیص ٹیسٹ ڈاکٹرز تجویز کریں گے۔ ان کی لیبارٹری رپورٹس فوری دی جاسکیں گی اور مریض اپنی رپورٹ اسی دن چیک کروا کر اپنا تفصیلی علاج معالجہ کروا سکیں گے یہ فیصلہ اس وجہ سے کیا گیا ہے کہ دور دراز سے آنے والے مریضوں کو ڈاکٹرز ٹیسٹ تجویز کر کے دیتے تھے تو ان کی لیبارٹری رپورٹس شام 4بجے ملتی تھی اور مریض کو تین دن بعد دوبارہ صرف رپورٹس چیک کروانے کیلئے آنا پڑتا تھا۔ جبکہ آؤٹ ڈور وارڈ میں مریضوں کے بیٹھنے کیلئے کرسیاں بھی نئی فراہم کی جائیں گے۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...