پنجاب اسمبلی ،اپوزیشن کا سپیکر ڈائس کا گھیراؤ ،وزیر اعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ ،پاناما یکس پر اسمبلی کی سیڑھیوں پر احتجاج

پنجاب اسمبلی ،اپوزیشن کا سپیکر ڈائس کا گھیراؤ ،وزیر اعظم سے مستعفی ہونے کا ...

  

لاہور(نمائندہ خصوصی ) پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن کا سپیکر کی چیئر کا گھیراؤ۔اپوزیشن کا وزیر اعظم کے مستعفی ہونے کا مطالبہ۔حکومتی اور اپوزیشن ارکان کی پارٹی قیادت کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی۔نبیلہ حاکم کی طرف کورم کی نشاندہی پر 20منٹ کے وقفے کے بعد حکومت کورم پورا کرنے میں کامیاب ہوگی۔اپوزیشن کا پاناما لیکس پر اسمبلی کے سیڑھیوں پر احتجاج ۔سپیکر نے پارکس اینڈ ہارٹیکلچراتھارٹی کی رپورٹ پر عام بحث کا اعلان کردیا۔پنجاب اسمبلی کا اجلاس معمول کے مطابق ایک گھنٹہ 22منٹ تاخیر سے شروع ہوا۔اجلاس کی کاروائی کاآغاز تلاوت قرآن پاک اور نعت رسول مقبول ؐ کے بعد کیا گیا۔اجلاس کی صدارت سپیکر رانا محمد اقبال خان نے کی۔اسمبلی کے ایجنڈے پر محکمہ ٹرانسپورٹ ،منصوبہ بندی و ترقیات اور سماجی بہبود و بیت المال کے متعلق سوالات کے جواب دیے گئے۔سوالوں کے جواب پارلیمانی سیکرٹری نواز چوہان ،پارلیمانی سیکرٹری کریم لنگڑیال نے دیے جبکہ محکمہ سماجی بہبود و بیت المال کے پارلیمانی سیکرٹری اور وزیر کے ایوان میں موجود نہ ہونے کی وجہ موخر کردیے گئے۔اپوزیشن کی جانب سے پانا ما لیکس پر ایوان میں شدید نعرے بازی اور سپیکر ڈائس کا گھیراؤ کیا گیا۔حکومت کو سرکاری کارروائی نہ کرنے دی ۔اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید نے نقطہ اعتراض پر بات کرتے ہوئے کہا وفاقی وزراء بھوکھلاہٹ کا شکار ہو چکے ہیں ۔ایک امدادی ہسپتال کو تنقید کا نشانہ بنا رہے ہیں ۔پوری دنیا میں ایسے منصوبے کی مثال نہیں ملتی۔دانیال عزیز،طلال چوہدری اور رانا ثناء اللہ کو نواز شریف نے خصوصی ٹاسک دیا ہے کہ شوکت خانم ہسپتال کو الزامات کی زد میں لایا جائے۔جس کی یہ دوباری تعمیل کررہے ہیں۔ملک میں اس وقت جو حالات چل رہے ہیں ایسے حالات صرف جنگو ں کے دوران پیدا ہوتے ہیں ۔وزیر اعظم کو پاناما لیکس پر استعفی دینا ہو گا اور اپنی جگہ کوئی اور وزیر اعظم لے کر آئیں۔تحریک انصاف نے اداروں کو جھنجوڑا ہے اب وہ درست فیصلے کرنے لگے ہیں ۔پیپلزپارٹی کے رکن اسمبلی سردار شہاب الدین نے نقطہ اعتراض پر گفتگو کرتے ہوئے کہا حکومت نے اسمبلی کا ماحول خراب کر دیا ہے اپوزیشن ممبران کو بات کرنے کی اجازت نہیں دی جاتی ۔پیپلزپارٹی حکومت کو ڈی ریل نہیں کرنا چاہتی بلکہ حکومت خود ڈی ریل ہونے کے منصوبے بنا رہی ہے ۔بلاول بھٹو زرداری نے جو چار نکات پیش کیے ہیں اگر وہ پورے نہ ہوئے تو پیپلز پارٹی 27نومبر کو ملک بھر میں احتجاج کرے گی۔تحریک انصاف کی رکن اسمبلی نبیلہ حاکم علی کی جانب سے کورم کی نشاندہی کی گئی پانچ منٹ بعد گنتی کی گئی لیکن کورم پورا نہ ہو سکا پندرہ منٹ کے وقفے کے بعد حکومت کورم پورا کرنے میں کامیاب ہو گی ۔سپیکر نے پارکس اینڈ ہارٹیکچر اتھارٹی پر عام بحث کا اعلان کردیا ۔سپیکر نے کہا جو ممبران بحث میں حصہ لینا چاہتے ہیں وہ اپنا نام جمع کرادیں۔سپیکر نے اجلاس پیر تین بجے تک ملتوی کردیا۔

مزید :

صفحہ اول -