عمرہ پر اضافی دوہزار ریال ختم نہ ہوسکے، بحران مزید شدت اختیار کر گیا

عمرہ پر اضافی دوہزار ریال ختم نہ ہوسکے، بحران مزید شدت اختیار کر گیا

  

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل)عمرہ پراضافی دو ہزار ریال ختم نہ ہو سکا عمرہ بحران مزید شدت اختیار کر گیا ،سعودی عمرہ کمپنیو ں کی نمائندہ تنظیم ،لجنا، نے آج ریاض سعودی عرب میں اجلاس طلب کر لیا ،سعودی وزارت حج کو لجنا کے نمائندے عمرہ ویزہ، ملٹی پل ویزہ،وزٹ ویزہ اور اقامہ کی فیسوں میں بے تحاشا اضافے سے پیدا ہونے والے بحران سے آگاہ کریں گے ،سوشل میڈیا پر دو ہزار ریال ختم ہو گیاہے کی خبریں عمرہ ایجنٹوں کی خواہشات اور افواہیں ثابت ہوئی ہیں ۔سعودی عمرہ کمپنیوں،مکہ ،مدینہ ہوٹل مالکان،پاکستانی عمرہ کمپنیوں،ائیرلائنز کو روزانہ کی بنیاد پر کروڑوں کا نقصان ہونا شروع ہو گیا ،عمرہ اپروول شروع ہونے کے باوجود ملک بھر سے چند افراد نے ویزہ کے لیے فیڈنگ کی اور موفہ جمع کر ایا ہے اکثریت کی طرف سے بائیکا ٹ جاری ہے،سعودی حکومت کی طرف سے یکم رمضان سے عمرہ شروع ہونے کی خبر کی بنیاد پر مکہ،مدینہ میں ہوٹلز حاصل کرنے والے ،ائیر لائنز کے ٹکٹ بنانے والے اور عمرہ ایجنٹوں کی طرف سے زیادہ سٹاف رکھنے کی وجہ سے نہ صرف پریشانی کا شکار ہو کر رہ گئے ہیں بلکہ کروڑوں کے نقصان کا بھی سامنا ہے ،20محرم آ گیا ہے یکم محرم کو عمرہ پر روانہ کریں گے کا وعدہ کرنے والوں نے ہزاروں پاسپورٹ جمع کر رکھے ہیں،دو ہزار ریال اضافی فیس لگنے اور17ہزار 440روپے انشورنس کے مسلط ہونے کے بعد کوئی عمرہ زائرین ویزہ لگوانے کے لیے تیار نہیں ،یہ بھی بات سامنے آ گئی ہے نفسا نفسی اس حد تک بڑھ گئی ہے عمرہ ایجنٹ اور حج آرگنائزر دو ہزار ریال ختم ہو جائیں کا مطالبہ اور خواہش ضرور رکھتے ہیں مگر سعودی حکومت کے خلاف احتجاج کے لیے کوئی تیار نہیں اس کی وجہ حج کوٹہ بتائی جا رہی ہے حالانکہ کئی اسلامی ممالک نے باقاعدہ تحریری طور پر سعودی حکومت سے احتجاج کیا ہے اور کئی ممالک میں احتجاجی مظاہرے جاری ہیں پاکستان سعودیہ کا سب سے قریبی دوست ملک ہے اس کے باوجود کسی سطح پر بھی احتجاج نوٹ نہیں کرایا جا رہا حالانکہ سعودیہ میں مقیم لاکھوں پاکستانی اقامہ فیسوں میں بے تحاشا اضافہ کی وجہ سے بے روز گار ہونا شروع ہو گئے ہیں۔

مزید :

صفحہ آخر -