محکمہ خزانہ پنجاب کی ٹاسک فورس نے ڈبل تنخواہیں لینے والے 600ملازمین کی نشاندہی کردی

محکمہ خزانہ پنجاب کی ٹاسک فورس نے ڈبل تنخواہیں لینے والے 600ملازمین کی ...

  

لاہور(نامہ نگار) محکمہ خزانہ پنجاب کی ٹاسک فورس نے پنجاب میں ڈبل تنخواہیں لینے والے 600سے زائد سرکاری ملازمین وافسران کی نشاندہی کردی ،ڈبل تنخواہ اے جی آفس کے ملازمین کی مبینہ ملی بھگت سے جاری ہوتی رہی ہے ،ذرائع کے مطابق اس رقم کی ریکوری کے لئے ان ملازمین سے اضافی تنخواہوں کی وصولی بھی شروع کردی گئی ہے۔تفصیلات کے مطابق محکمہ خزانہ پنجاب کی جانب سے چیف سیکرٹری کے حکم پر ایک ٹاسک فورس تشکیل دی گئی تھی جنہیں احکامات دیئے گئے تھے کہ وہ لاہور سمیت صوبہ بھر میں گھوسٹ ملازمین اور ڈبل تنخواہ لینے والوں کا پتہ لگائے جس کے بعدمذکورہ ٹیم کو حاصل ہونے والی معلومات کے مطابق 3اضلاع میں انکشاف ہوا ہے کہ 600 زائد سرکاری افسران و ملازمین ڈبل اکاونٹس کے ذریعے تنخواہ لے رہے تھے،ذرائع کا کہنا ہے کہ آکاونٹنٹ جنرل پنجاب کے ملازمین کی مبینہ ملی بھگت سے ملازمین و افسران اضافی تنخواہیں لے رہے تھے، ضلع ملتان میں 490،ننکانہ 61 اور شیخوپورہ میں60 سرکاری ملازمین 3 سال میں ایک کروڑ روپے کی اضافی تنخواہیں لے رہے ہیں جن میں گریڈ 17،16،15 اور دیگر گریڈ کے ملازمین و افسران شامل ہیں۔ذرائع کے مطابق ننکانہ میں 28 لاکھ،ملتان 60 لاکھ شیخوپورہ میں 20 لاکھ روپے کی اضافی رقم مبینہ طور پرسرکاری افسروں کے اکاؤنٹس میں منتقل کی گئی ہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -