ڈیرہ ،عمر قید اور جرمانہ کی سزا کالعدم ،بری کرنے کے احکامات

ڈیرہ ،عمر قید اور جرمانہ کی سزا کالعدم ،بری کرنے کے احکامات

  

ڈیرہ اسماعیل خان(سٹاف رپورٹر) پشاورہائیکورٹ کے جسٹس سیٹھ وقار اور جسٹس اشتیاق ابراہیم پر مشتمل ڈویژن بینچ نے عمر قید اور دو لاکھ روپے جرمانہ کے قیدی شائستہ خان ولد مولا داد خان سکنہ چودھوان کے کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے کیس سے بری کرنے کے احکامات جاری کردئے ۔شائستہ خان کی طرف سے عدالت میں معروف قانون دان شاہ شجاع اللہ ایڈوکیٹ بلا معاوضہ پیش ہوئے۔مقتول کی طرف سے ان کے وکلاء سیف الرحمن لونی ایڈوکیٹ ، حاجی شکیل ایڈوکیٹ اور ایڈیشنل ایڈوکیٹ جنرل محمد عدنان پیش ہوئے۔تین گھنٹے بحث کے بعد عدالت نے ملزم کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے کیس سے بری کردیا ۔24جون2012کو تھانہ چودھوان کی حدود میں واقعہ علاقہ چودھوان میں عبدالرحمن نامی شخص کو کلہاڑیوں کے وار کرکے قتل کیا گیا جس کی دعویداری شائستہ خان پر کی گئی 2014میں ایڈیشنل سیشن جج نمبر فسٹ نے شائستہ خان کو عبدالرحمن قتل کیس میں عمر قید اور دو لاکھ روپے جرمانہ کی سزا سنائی تھی جس میں شائستہ خان گذشتہ روز بری ہوگیا ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -