سڑک پر چلتی لڑکی کو ماڈلنگ کی پرکشش پیشکش لیکن پھر نتیجہ کیا نکلا؟ جان کر ہر لڑکی کانپ اٹھے

سڑک پر چلتی لڑکی کو ماڈلنگ کی پرکشش پیشکش لیکن پھر نتیجہ کیا نکلا؟ جان کر ہر ...
سڑک پر چلتی لڑکی کو ماڈلنگ کی پرکشش پیشکش لیکن پھر نتیجہ کیا نکلا؟ جان کر ہر لڑکی کانپ اٹھے

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) ماڈلنگ اور اداکاری کا جھانسہ دے کر لڑکیوں کو بیرون ملک لیجانے اور جسم فروشی پر مجبور کردینے کا دھندہ دنیا میں عروج پر ہے اورآئے روزسینکڑوں لڑکیاں انسانوں کا روپ دھارے ان شیطانوں کی بھینٹ چڑھ رہی ہیں۔ جو لڑکی ان کے چنگل سے چھوٹ جاتی ہے وہ اپنی عزت باقی رکھنے کے لیے خاموش رہتی ہے جس سے ان شیطانوں کا کاروبار وسیع تر ہو رہا ہے۔ سویڈن کی ایک اداکارہ کے ساتھ بھی یہی سانحہ پیش آیا مگر اس نے خاموش رہنے کی بجائے دنیا کو اس مکروہ دھندے سے آشنا اورماڈلنگ کی شوقین لڑکیوں کو چوکنا کرنے کے لیے اپنے اس واقعے پر فلم بنا ڈالی ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق 36سالہ اداکارہ فریڈا فیریل کو ایک شخص نے ماڈلنگ کا جھانسہ دیا اورپیرس سے لے کر لندن آ گیا۔ اس شخص نے فریڈا کو بتایا کہ وہ کاسٹنگ ڈائریکٹر ہے جس پر فریڈا نے اعتبار کر لیا۔ فریڈا کی عمر اس وقت 22برس تھی اور وہ ماڈلنگ میں کیریئر بنانے کے لیے سویڈن سے فرانس کے دارالحکومت پیرس منتقل ہوئی تھی۔ لندن لا کر اس شخص نے فریڈا کو ایک اپارٹمنٹ میں 3دن تک محبوس رکھا اور اجنبی مردوں کے ساتھ جنسی تعلق پر مجبور کرتا رہا۔

رپورٹ کے مطابق ان تین دنوں میں 5مردوں نے فریڈا کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا۔فریڈانے بتایا کہ لندن میں جب وہ شخص مجھے اپارٹمنٹ لے کر گیا تو اس کا رویہ بہت اچھا تھا جو اپارٹمنٹ میں داخل ہوتے ہی یکایک تبدیل ہو گیا۔ اس نے تیزی سے دروازہ بند کیا اور ایک چاقو نکال لیا۔ پھر اس نے مجھے دودھ کا ایک گلاس پینے کے لیے دیا جس میں کوئی نشہ آور چیز تھی۔ میرے بیہوش ہونے پر اس نے مجھے برہنہ کرکے میری تصاویر دکھائیں۔ ہوش میں آنے پر اس نے خود مجھے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا اوراس کے بعد دوسرے مردوں کو لانا شروع کر دیا۔ اس مصیبت کے تیسرے روز وہ اپارٹمنٹ میں آیا اور مجھے کہا کہ ایک آدمی آ رہا ہے، تیار ہو جاﺅ۔ اتنا کہہ کر وہ باہر نکل گیا۔ میں نے محسوس کیا کہ وہ خلاف معمول دروازہ لاک کرنا بھول گیا ہے۔ میں نے دیکھا تو دروازہ واقعی کھلا تھا۔ وہ لفٹ سے نیچے گیا تھا، میں نے سیڑھیوں کے ذریعے نیچے کی طرف دوڑ لگا دی اور عمارت سے باہر نکل گئی۔ میں اتنی خوفزدہ تھی کہ مجھے نہیں معلوم کہ میں کتنی دیر تک سڑک پر دوڑتی رہی۔“ اب فریڈا نے اپنے ساتھ ہونے والی اس گھناﺅنی واردات پر ایک فلمی کہانی لکھی ہے اور خود ہی اس فلم میں مرکزی کردار ادا کر رہی ہے۔ اس فلم کا نام Selling Isobelہے جو جلد نمائش کے لیے پیش کی جائے گی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -