سموگ سے بچاؤ اور زمینوں کو زرخیز بنانے کیلئے جدید ٹیکنالوجی متعارف کرائی ہے، محکمہ زراعت پنجاب

سموگ سے بچاؤ اور زمینوں کو زرخیز بنانے کیلئے جدید ٹیکنالوجی متعارف کرائی ...

  

لاہور(آن لائن )محکمہ زراعت پنجاب نے سموگ سے بچاؤ اور زمینوں کو مزید زرخیز بنانے کے لیے جدید ٹیکنالوجی متعارف کرائی ہے جس کو اپنانے سے کسانوں زمینداروں کو چاول کی فصلوں کے بھوسے کو آگ لگانے کی ضرورت بھی نہیں رہے گی بلکہ اسی بھوسے سے نامیاتی کھادوں کا کام لیا جائے گا،بیرون ممالک سے درآمدکی جانیوالی زرعی مشینری کا تجربہ شیخوپورہ کے علاقہ مانانوالا میں کیا گیا اس موقع پرایڈیشنل سیکرٹری ٹاسک فورس محکمہ زراعت پنجاب بینش فاطمہ ، ڈائریکٹر محکمہ زراعت توسیع پنجاب سید ظفریاب حیدر، محکمہ زراعت شیخوپورہ آفیسر سید ہاشم رضا، محمد عارف صدیق ضلع شیخوپورہ کے مثالی کاشتکا ر میاں محمد اقبال سمیت زرعی ماہرین اور زمیندار بھی موجود تھے۔

، میڈیاسے گفتگو کرتے ہوئے ایڈیشنل سیکرٹری ٹاسک فورس محکمہ زراعت پنجاب بینش فاطمہ اور دیگر ان کا کہنا تھا کہ درآمد کی جانیوالی جدید مشینری (paddy straw chopper)پیڈی سٹر ا چاپر کے استعمال سے چاول کی فصل کا بھوسہ باریک ٹکڑوں کی شکل میں زمین میں ہی جذب ہوگا اور نامیاتی کھادوں کا کام دے گا ، جس سے پیداوار میں اضافے کے ساتھ سموگ سے بھی بچاؤ ممکن ہوگا ،واضح رہے کہ پاکستان کے اکثر علاقوں کو موسمی تغیرات کا سامنا ہے جس میں سموگ کے باعث فصلوں کو نقصان کے ساتھ ساتھ انسانی صحت پر بھی برے اثرات مرتب ہو رہے ہیں ، سموگ فصلوں کے بھوسے کو آگ لگانے سے پیدا ہونیوالے دھویں سے پیدا ہوتی ہے ، کاشتکاروں نے بھی محکمہ زراعت کی اس کاوش کو سراہا ہے۔#/s#

مزید :

کامرس -